جرمنی میں 43 ہزار انتہا پسند - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: ہفتہ, 7 جنوری, 2017
0

جرمنی میں 43 ہزار انتہا پسند

1

گزشتہ ماہ جرمن کی دار السلطنت برلن میں 12 افراد کی موت کا سبب بننے والے ٹرک حادثہ کے بعد جرمنی پولسس

کولون (جرمنی): ماجد خطیب

        کل 2016 میں انتہاپسندی سے متعلق شائع کردہ جرمن آئین کے محکمۂ تحفظ (جنرل سیکیورٹی ڈائریکٹوریٹ) کی ایک رپورٹ میں اس بات کا ذکر ہے کہ جرمنی میں رہنے والے 43 ہزار  سے زائد مسلمان "سخت گیر منظرنامہ” میں ہیں اور رپورٹ میں اس بات کا بھی ذکر ہے کہ ان میں سے 11 ہزار لوگوں کے پاس "دہشت گردانہ رجحانات” ہیں۔

        آئین کے محکمۂ تحفظ اور دیگر سیکورٹی اداروں کی بنیاد پر یہ بات کہی جا رہی ہے کہ دہشت گردانہ رحجانات رکھنے والے 11 ہزار انتہا پسندوں میں  548 ایسے افراد ہیں جو  دہشت گردانہ کام کر سکتے ہیں اور اس کے لئے وہ مکمل تیار ہیں اور ان میں سے نصف سے زائد ابھی جرمنی میں موجود ہیں جن میں 80 قید ہیں۔ ان کے علاوہ متعین  360 افراد ہیں حن کے بارے میں بیان کیا جاتا ہے کہ وہ سیاسی اسباب کی وجہ سے جرم کا ارتکاب کرنے کے لئے تیار ہیں۔

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>