"نصرت فرنٹ" سمیت مخالف جماعتیں دمشق کے مرکز میں حکومت کو دبوچ رہی ہے - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
کو: پیر, 20 مارچ, 2017
0

"نصرت فرنٹ” سمیت مخالف جماعتیں دمشق کے مرکز میں حکومت کو دبوچ رہی ہے

شام میں تہران کی حمایت یافتہ ملیشیاؤں  کے انخلاء کے بارے میں روس – ترک – ایران مذاکرات
news-190317-2

کل شامی دارالحکومت کے مشرقی محلوں پر مخالف اسلامی جماعتوں اور جنگجوؤں کی طرف سے میزائلوں کی سخت بمباری کے بعد دمشق کے مضافاتی علاقے جوبر سے بلند ہوتے دھوئیں کے بادل (ا.ف.ب)

 

بيروت: كارولين عاكوم – ماسكو: طہ عبد الواحد

      کل مخالف شامی جماعتوں نے دمشق کے مرکز میں القابون اور جوبر میں واضح پیش قدمی کرتے ہوئے حکومت کو دبوچ لیا ہے۔ جبکہ روسی میڈیا نے شام میں ایران کی حمایت یافتہ ملیشیاؤں کے انخلاء کے بارے میں روسی – ایرانی – ترکی مذاکرات کا انکشاف کیا ہے۔

      دریں اثناء کل دمشق میں خوف وہراس پھیل گیا اور شامی حکومت نے اپنی فوج کو متحرک کرتے ہوئے مختلف علاقوں میں ٹینکوں کو تعینات کر دیا ہے۔ شام میں انسانی حقوق کی رصد گاہ نے کہا کے کہ "آزادیٔ شام کی فوج”؛ جو کئی ایک مخالف جنگجو جماعتوں پر مشتمل ہے اور ان میں "فتح شام فرنٹ” سابقہ "نصرت فرنٹ” نمایاں ہے، دمشق کے وسطی علاقے میں گاڑیوں اور بسوں کے ایک اسٹینڈ "گیراج العباسیین” پر خاموشی سے کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔ رصد گاہ نے وضاحت کی کہ جنگجو " گیراج کے کئی حصوں پر کنٹرول کر چکے ہیں۔ اس طرح سے حکومتی فوج نے جو نقصان اٹھایا ہے اس کے دوبارہ حصول کے لئے سخت جھڑپوں کا سامنا کرنا ہوگا”۔

      دوسری جانب کل روسی میگزین "ازویسٹیا” نے روسی ڈپلومیٹک فوجی ذرائع سے نقل کیا ہے کہ روسی، ترکی اور ایرانی نمائندگان نے "آستانہ” مذاکرات کے دوران شامی حکومت کے ہمراہ لڑانے والے "شیعہ گروپوں” کے شام سے انخلا کے مسٔلہ پر تبادلۂ خیال کیا، جن میں سرفہرست "حزب اللہ” ہے۔

      ذرائع کے مطابق تبادلہ خیال کے دوران "حزب اللہ” کو شام کے دیگرعلاقوں’ خاص طور سے ملک کے شمالی علاقوں، سے نکال کر ان کے لئے کوئی ایک علاقہ مختص کرنے پر بھی غور کیا گیا۔ "ازویسٹا” میں مزید کہا گیا ہے کہ "شیعہ ملیشیاؤں کے موضوع پر آستانہ مذاکرات کے مئی میں ہونے والے راؤنڈ کے دوران بھی بات چیت جاری رہے گی۔

پیر 21 جمادى الثانی 1438 ہجری­ 20 مارچ 2017ء  شمارہ: (13992)

 

 

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>