عرب یونیورسیٹیوں میں ہزاروں سال پرانی ازہر یونیورسیٹی - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعہ, 7 اپریل, 2017
0

عرب یونیورسیٹیوں میں ہزاروں سال پرانی ازہر یونیورسیٹی

888

لندن: "الشرق الاوسط”

        سب سے پرانی عرب یونیورسٹی کے فیصلہ کے سلسلہ میں مختلف آراء ہیں۔ بعض لوگوں کا کہنا ہے کہ قاہرہ یونیورسیٹی سب سے پرانی یونیورسٹی ہے جبکہ اس کی بنیاد 1908ء میں رکھی گئی ہے اور تاریخ میں اس یونیورسٹی کے مقابلہ میں جزائر یونیورسٹی کا ذکر کیا جاتا ہے۔ بعض لوگوں کا کہنا ہے کہ بیروت کی امریکن یونیورسٹی سب سے پرانی عرب یونیورسٹی ہے کیونکہ اس کی بنیاد بیسویں صدی سنہ 1866ء میں رکھی گئی ہے اور اس کے بعد مزید دو یونیورسٹیون کی بنیار رکھی جانے کا بھی ذکر ملتا ہے ان میں ایک سن جوژیف یونیورسٹی ہے جس کی بنیاد 1872ء میں رکھی گئی ہے اور دوسری لاسگین یونیورسٹی ہے جس کی بنیاد 1875ء میں رکھی گئی ہے لیکن بنیادی اعتراض یہ ہے کہ یہ یونیورسیٹییاں سب سے پرانی نہیں ہیں جبکہ ان میں سے بعض یونیورسٹی تو غیر ملکی ہے اور اس کی بنیاد عرب سرزمین پر رکھی گئی ہے۔

         لیکن جس بات میں کوئی اختلاف نہیں ہے وہ ازہر یونیورسٹی کی بنیاد کی تاریخ ہے کیونکہ اس کی بنیاد مصر کے اندر فاطمیوں کے دور سنہ 970ء میں رکھی گئی ہے یعنی اس کی بنیاد دنیا کی دوسری یونیورسیٹیوں کے مقابلہ میں پہلے رکھی گئی ہے۔ اس کی بنیاد ابتدائی اور ثانوی مرحلوں کے طلبہ کی تعلیم کے لیے ایک مدرسہ کے طور پر رکھی گئی ہے اور طلبہ یہاں سے ازہری سند بھی حاصل کرتے ہیں۔ یہ سند اسلامی علوم کے مختلف تخصصات میں ہوتی ہے لیکن اب اس یونیورسیٹی میں حالیہ چند سالوں کے اندر علوم وآداب کے مختلف شعبے بھی کھول دئے گئے ہیں جیسے کہ معیشت، میڈیکل، انجینئرنگ اور زراعت وغیرہ کے شعبے اور اس یونیورسٹی کو سنہ 1961ء میں ایک سرکاری اکیڈمک یونیورسٹی کا مقام دے دیا گیا ہے۔

(چاری)

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>