تعلیمی ادارہ پر ایک نگاہ: "اکزیٹر" 70 تحقیقی مرکز جن میں عرب اور اسلامی علوم سرفہرست - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعہ, 12 مئی, 2017
0

تعلیمی ادارہ پر ایک نگاہ: "اکزیٹر” 70 تحقیقی مرکز جن میں عرب اور اسلامی علوم سرفہرست

u

یونیورسٹی میں سند یافتگان کی ایک جماعت

لندن: کمال قدورہ

         اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ "اکزیٹر” یونیورسٹی عرب اور اسلامی علوم میں سب سے زیادہ مشہور برطانیہ کی یونیورسٹی ہے اور اسی طرح یہ یونیورسٹی دنیا میں برطانیہ کی ایک مرکزی اور روایتی یونیورسٹی کے اعتبار سے مشہور ہے۔ یہ یونیورسٹی انگلینڈ کے مغربی جنوب میں ڈیفون کے ایک شہر میں واقع ہے۔

        اس یونیورسٹی کا آغاز سنہ 1855ء میں آرٹس اور سائنس کے ایک اسکول کے قیام کے ساتھ ہوا تھا لیکن سنہ 1955ء میں اسے سرکاری طور پر ایک یونیورسٹی کے طور پر قبول کر لیا گیا۔

        یونیورسٹی میں 22 ہزار طلبہ ہیں جن میں چار ہزار ہایئر ایجوکیشن میں ہیں۔ اس یونیورسٹی کی سالانہ آمدنی نصف ارب ڈالر سے زائد ہے اور عالم عربی اور عالم اسلامی کے ساتھ اس یونیورسٹی کا بہت ہی مضبوط اور پرانا تعلق ہے اور اس یونیورسٹی میں گزشتہ سالوں میں سینکڑوں عرب طلبہ تعلیم حاصل کر چکے ہیں۔

پیر 11 شعبان 1438 ہجری­ 8 میئ 2017ء شمارہ: (14041)

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>