ڈی مستورا کی طرف سے تجویز کردہ "آئینی طریقہ کار" پر شامی مخالف جماعتوں کے تحفظات - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: بدھ, 17 مئی, 2017
0

ڈی مستورا کی طرف سے تجویز کردہ "آئینی طریقہ کار” پر شامی مخالف جماعتوں کے تحفظات

              ڈی مستورا کل جنیوا میں مخالف جماعتوں کے وفد کے ساتھ اجلاس کے دوران (رویٹرز)

 

بيروت – جنیوا: "الشرق الاوسط”

       شام کے لئے اقوام متحدہ کے ایلچی سٹیفن ڈی مستورا نے کل "منجمد مذاکرات” کو آئینی اور قانونی اعتبار سے مشاورتی میکانیزم کی تجویز کے ذریعے توڑنے کی کوشش کی، جبکہ مخالف جماعتوں نے اس پر تحفظات کا اظہار کیا ہے۔

      شامی مخالف جماعتوں کے اہم ذرائع نے "الشرق الاوسط” کو بتایا کہ جنیوا میں شامی مذکرات کے چھٹے راؤنڈ کے دوران ڈی مستورا نے شام کے نئے آئین کی تشکیل کے لئے مشاورتی میکانیزم کی تجویز دی، تاکہ اس کی بنیاد پر مذاکراتی عمل آگے بڑھے۔ ذرائع نے نشاندہی کی ہے کہ بین الاقوامی ایلچی "مذاکرات کی راہ میں رکاوٹ سے بچتے ہوئے ایک نظام قائم کرنا چاہتے ہیں تاکہ عملی طور پر روسی فریق کو ان مذاکرات سے الگ کر دیا جائے جو کہ سیاسی منتقلی؛ جس پر مخالف جماعتوں کا اصرار ہے، اس کے بدلے میں آئین کے معاملے پر بات چیت کرنے کو ترجیح دیتا ہے”۔ ذرائع نے وضاحت کی کہ مخالف جماعتوں نے تجاویز پر غور کرنے کے لئے کل رات اجلاس منعقد کیا اور کئی ایک تحفظات کو ریکارڈ کیا مگر کوئی ایک موقف اختیار نہیں کیا گیا۔

بدھ 20 شعبان 1438 ہجری­ 17 مئی 2017ء  شمارہ: (14050)
الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>