2006ء اور 2003ء کی چیمپیئن یہ دونوں ، یونین سے نمبر برابر کرنے کی - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: پیر, 7 نومبر, 2016
0

2006ء اور 2003ء کی چیمپیئن یہ دونوں ، یونین سے نمبر برابر کرنے کی

کوشش میں، گوانگجو چونبوک امارات کی العین کے ساتھ ایشین چمپیئن کے فائنل میں

15-2

سول (جنوبی کوریا): "الشرق الاوسط”

        جنوبی کوریا کی 2006ء کی چمپیئن چونبوک امارات کی 2003ء کی چمپیئن العین کے مد مقابل ایشین فٹ بال چمپیئن شپ کے فائنل میں پہنچ چکی ہے باوجود اسکے کہ وہ اپنی ہم وطن میزبان ایف سی سول سے کل بروز بدھ سیمی فائنل میں1 کے مقابلے میں 2 گول سے شکست کھائی ، جبکہ اپ سٹپ میں 1 کے مقابلے میں 4 گول سے کامیاب ہوئی تھی۔ برازیلی ادریانو (38) اور کو کوانگ مین (90+2) سیول اور برازیلی ریکارڈو لوپیز (59) نے چونبوک کے حق میں ریکارڈ بنائے۔

العین نے پرسوں منگل کے روز اپنی میزبان قطری عسکری ٹیم سے ڈاؤن سٹپ کا میچ 2 کے مقابلے میں 2 سے برابر کر دیا اگرچہ  اپ سٹپ میں 1 کے مقابلے میں 3 گول سے برتری حاصل کی تھی۔ یہ اس طرح سے العین اور چونبوک کیلئے ایک موقع ہوگا کہ دوسری مرتبہ  یہ لقب حاصل کر سکیں جیسا کہ سعودی عرب کی جدہ اتحاد نے 2004ء اور 2005ء میں، چین کی گوانگجو ایفرغراندی نے 2013ء اور 2015ء میں حاصل کیا۔ چونبوک آئندہ ماہ 19 نومبر کو العین کی پہلے میزبانی کرے گی جو کہ 26 کو العین میں اسکا مہمان بننے سے قبل ہے۔

ایشین چیمپئن شیڈول کے مطابق 8 سے 18 دسمبر تک کے لئے جاپان میں ہونے والے فیفا ورلڈ کپ میں حصہ لے گی۔ ایشین چمیئن فیفا ورلڈ کپ کے کوارٹر فائنل میں امریکی میکسیکی کونکاکاف کی چمپیئن سے مقابلہ کرے گی۔ امارت کی ٹیم العین اپنی تاریخ میں تیسری بار ایشین فٹ بال چمپیئن کے فائنل میں پہنچی ہے۔  امید کی جاتی ہے کہ وہ تیسری ٹیم ثابت ہو جو دو مرتبہ براعظمی کا لقب حاصل کر سکے ، سن 2003 سے مقابلے کے لئے اس نے اعتماد کا ایک نیا انداز اپنا رکھا ہے۔ علاوہ ازیں  العین نے ایشین فائنل کی یقین دہانی اپنی قطری عسکری ٹیم سے واپسی کے میچ میں 2 کے مقابلے میں 2 سے برابر کر کے  جبکہ اس سے قبل 1 کے مقابلے میں 3 گول سے برتری حاصل کرکے آخری دو بار مغربی ایشیا کے خطے میں اماراتی کلبوں کا غلبہ ، جو کہ اسکی ہم وطن نیشنل ٹیم گزشتہ راؤنڈ میں سعودی ٹیم الھلال کو 1 کے مقابلے میں 1 گول سے انکی سرزمین پر اور 2 کے مقابلے میں 3 گول سے اپنی سرزمین پر برتری حاصل کی۔  جبکہ سعودی عرب کی ٹیم وہ ہے کہ جس نے 2004ء اور 2005ء میں 2 بار لقب جیتا جسے 2013ء اور 2015ء میں چین کی ٹیم گوانگجو ایفرغراندی نے برابر کر دیا۔

امید ہے کہ العین کی ٹیم گوانگجو کی ٹیم کے نقش قدم پر چلتے ہوئے جنوبی کوریا کی ٹیم چونبوک اور اسکی ہم وطن ٹیم سول کلب، یاد رکھیں کہ ٹاس مغربی ایشیاء کی نمائندہ ٹیم العین کو برتری دی جو کہ 26 نومبر کو اپنی سرزمین پر واپسی کے میچ کے آخری راؤنڈ کی میزبانی کرے گی جبکہ پہلا میچ 19 کو مشرقی ایشیاء کے علاقے سے جیتنے والی ٹیم کی سرزمین پر کھیلا جائے گا۔ العین نے 2005ء میں میچ کو 1 کے مقابلے میں 1 گول سے برابر کیا اور جدہ میں 4 کے مقابلے میں 2 گول کر کے شکست کھا کر اس لقب کو دوبار حاصل کرنے والی پہلی ٹیم بننے کا موقع ضائع کر دیا۔ اب العین کی ٹیم 2003ء کے بعد دوبارہ اس لقب کو حاصل کرنے کیلئے ہر ممکن فنی اور ٹیکنیکی صلاحیت کو برو‎ۓ کار لائے گی۔ جس چیز کی یقین دہانی حالیہ ویژن کے مطابق ہو رہی ہے جبکہ وہ اس راؤنڈ کے پہلے دو میچ کے نقصان کے بعد تمام گروپوں میں اول نمبر پر ہے اور فائنل کیلئے بھی کوالیفائی کر چکی ہے۔  العین نے پہلے دو میچوں میں تیسرے گروپ کی قطر کی عسکری ٹیم سے اپ  اور ڈاؤن   پر 1 کے مقابلے میں 2 گول سے نقصان اٹھایا، تاکہ غیر معمولی کارکردگی کے ذریعے مسلسل دس میچ میں ناقابل شکست بن سکے۔

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

متعلقہ عنوانات‬:, , ,
شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>