سعودی عرب وزارت داخلہ: نامعلوم حملہ آوروں کی فائرنگ میں ایک سکیورٹی فورس اہلکار کی "شہادت" - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: اتوار, 20 نومبر, 2016
0

سعودی عرب وزارت داخلہ: نامعلوم حملہ آوروں کی فائرنگ میں ایک سکیورٹی فورس اہلکار کی "شہادت”

جنرل ترکی نے اس بات کی تاکید کی کہ واردات اور اس کے اسباب کی تحقیق جاری ہے

urdu

الدمام: عبید السھیمی

     سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے کل نامعلوم جگہ سے فائرنگ کا  شکار ہوجانے کی وجہ سے دمام میں سرکاری ادارے کی حفاظت پر مامور ایک سکیورٹی اہلکار کی "شہادت” کا اعلان کیا.

     سعودی عرب کی وزارت داخلہ کے پولیس ترجمان جنرل منصور الترکی نے یہ واضح کیا کہ فوجی عادل بہلول خردلیہ جو ایک سرکاری ادارے میں متعین سیکورٹی فورسز کا اہلکار تھا وہ اس وقت نامعلوم حملہ آوروں کی فائرنگ کا شکار ہوگیا جب وہ شہر دمام کے مغرب میں النور نامی علاقہ میں اپنی گاڑی سے اتر کر پیدل چل رہا تھا، وہ فائرنگ کے نتیجہ میں ہفتہ کی صبح کو دس بجکر ایک منٹ (10:1A.M.) پر جام شہادت نوش کرتے ہوئے داعی اجل کو لبیک کہہ گیا۔

     الترکی نے مزید یہ بھی کہا کہ مشرقی علاقے کی پولس میں کرائم دستے کے خصوصی ماہرین  جرم کی قانونی کارروائی  کو براہ راست انجام دے رہے ہیں اور

واردات اور اس کے اسباب کی تحقیق جاری ہے،

     سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے پچھلے 30 اکتوبر کو (مشرقی سعودی عرب) قطیف اور عوامیہ کے حادثات میں نئے مطلوب لوگوں کی ایک لسٹ کا اعلان کیا تھا، اسی لسٹ میں ایک بحرینی مواطن کا بھی نام تھا ، بایں طور کہ دہشت گرد گروہ نے سات سیکیورٹی فورسز اہلکار کے ساتھ رقم منتقل کرنے والی کمپنیوں کے تین ملازمین کو بھی اپنا نشانہ بنایا تھا۔

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>