اریٹیریائی وزیر خارجہ: عرب اور افارقہ کے لئے سلامتی کونسل میں دو مستقل سیٹوں کی مانگ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
سوسن ابوحسین
کو: پیر, 21 نومبر, 2016
0

اریٹیریائی وزیر خارجہ: عرب اور افارقہ کے لئے سلامتی کونسل میں دو مستقل سیٹوں کی مانگ

%d9%88%d8%b2%d9%8a%d8%b1-%d8%ae%d8%a7%d8%b1%d8%ac%d9%8a%d8%a9-%d8%a7%d8%b1%d9%8a%d8%aa%d9%8a%d8%b1%d9%8a%d8%a7

انٹرویو: سوسن ابو حسین

     اریٹیریائی وزیرخارجہ عثمان احمد صالح نے اس بات کی تاکید کی ہے کہ بیرونی دخل اندازی کے خطروں سے (جو اپنے خاص ایجنڈا کے تحت کام کر رہے ہیں اور دہشت گردی کی لہر کی سبب ہیں) اس خطے کی حفاظت کرنے کے ل‍ئے عربی و افریقی مشارکت بہت اہمیت رکھتا ہے۔

     انہوں نے عربی افریقی اسمبلی کی جد و جہد پر زور دیتے ہوئے اقوام متحدہ کے نظام اور  انٹرنیشنل سلامتی کونسل میں اصلاحات کا مطالبہ کیا ہے نیز سلامتی کونسل میں عرب اور افارقہ کے لئے دو مستقل سیٹوں کی بھی مانگ کی ہے۔

      صالح نے "الشرق الاوسط” کو دیئے ہوئے اپنے ایک انٹرویو میں یہ خیال ظاہر کیا ہے کہ بحر احمر کی سلامتی اور اس کا استقرار یہ ان عربی و افریقی ملکوں کی ذمہ داری ہے جن کی سرحدیں اس سے مل رہی ہیں، انہوں نے اس بات کا بھی مطالبہ کیا ہے کہ مکمل مشارکت اور حکمت عملی کے دائرہ میں رہ کر کام کیا جائے اور ساتھ ہی سلامتی ، سرمایا کاری اور مختلف قسم کی تجارت پر بھی کچھ اس انداز میں توجہ دیا جائے جس سے تمام لوگوں  کے مفاد پورا ہوسکیں۔

     صالح نے اس بات پر بھی زور دیتے ہوئے کہا کہ اریٹیریا عربی و افریقی معاملوں میں ایران کی دخل اندازی کو مسترد کرتا ہے ، مزید یہ بھی کہا کہ اسمرہ تہران سے اس بات کا مطالبہ بھی کر رہا ہے کہ وہ اس دخل اندازی سے باز آجائے۔

     صالح (جن کے اپنے ملک کے سعودی عرب کے ساتھ تعلقات بہت اچھے ہیں) نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اریٹیریا سعودی عرب کی حمایت کرتا ہے اور اس کے ساتھ اتحادی دائرہ میں رہ کر کام کرتا ہے تاکہ حوثیوں کی جنگ کو روکا جاسکے نیز پرامن اور فوجی دھمکیاں دونوں کو بروئے کار لا کر یمن میں استقرار بحال کیا جاسکے۔ اسی طرح امارات کو اریٹیریا کے شہر عصب میں موجود اڈے کو فوجی کارروائیوں میں استعمال کرنے کی اجازت دے کر ان کا ملک (عربی) اتحادیوں میں بھی شریک ہے۔

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>