خلیج اور اقوام متحدہ میں ایرانی جوہری آلہ کے گم ہونے پر ہلچل - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
کو: جمعرات, 24 نومبر, 2016
0

خلیج اور اقوام متحدہ میں ایرانی جوہری آلہ کے گم ہونے پر ہلچل

تمیمی "الشرق الاوسط” سے: "بوشہر” ری ایکٹر پر حفاظت کی کمزورسطح  پر تشویش،  خامنہ ای کی واشنگٹن کی طرف سے  پابندیاں بڑھانے کی صورت میں دھمکی
atomic

خلیج عرب پر واقع بوشہر کی بندرگاہ میں بوشہر ایٹمی بجلی گھر میں ایک ملازمہ اپنے کام کی نگرانی کرتے ہوئے

رياض: فہد الذيابی ـ لندن: عادل السالمی

        بوشہر میں ایرانی ایٹمی ری ایکٹر کے ایک تابکاری حصے کے ضائع ہونے پر خلیجی عہدیدار نے یقین دہانی کی کہ خلیجی ممالک بین الاقوامی ایٹمی توانائی کی ایجنسی کے ساتھ مل کر خلیج عرب میں پانی کی آلودگی پر ممکنہ منفی اثرات کا جائزہ لے رہے ہیں۔

       ہنگامی صورت حال میں خلیجی تعاون تنظیم کے مرکز کے ڈائریکٹر ڈاکٹر عدنان التمیمی نے صنعتی مقاصد میں استعمال کئے جانے تابکار آلہ کو اسے لے جانے والی گاڑی کے چوری ہونے اور پھر اسکے بغیر گاڑی کے ملنے پر ہونے والے نقصان پر تشویش کا اظہار کیا۔

      تمیمی نے "الشرق الاوسط” سے بات کرتے ہوئے مزید کہا کہ سائنسی اندازے اس بات کی نشاندہی کرتے ہیں کہ تابکاری آلہ بند ہونے کی صورت میں 74 دنوں کے بعد اپنی آدھی قوت کھو دیتا ہے مگر یہ معاملہ آلہ کو خطے سے اسمگل کرنے کی صورت میں احتیاط کا متقاضی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ "ایرانی جوہری منصوبے میں مجموعی طور پر بے اعتمادی کے تناظر میں ایرانی "بوشہر” ری ایکٹر پر حفاظت وسیکورٹی کا انتہائی کمزور لیول خدشات کا باعث ہے”۔

      تمیمی نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ ہوا، پانی اور ماحول کے تمام شعبوں میں تابکاری کی صورت میں خلیجی ریاستوں میں ابتدائی انتباہ کیا جا چکا ہے جبکہ تابکاری سے متاثر ہونے کی صورت میں خاص وضاحتی مشقیں بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی کے تعاون سے آئندہ سال منعقد کی جائیں گی۔

         ایک اور ایرانی تناظر میں، ایرانی سپریم لیڈر علی خامنہ ای نے وائٹ ہاؤس کی طرف سے انکے ملک پر امریکی پابندیوں کے فیصلہ کی صورت میں جوابا ریاست ہائے متحدہ امریکہ کو دھمکی دی ہے جسے حال ہی میں امریکی ایوان نمائندگان کی طرف سے منظور کیا گیا ہے، علاوہ ازیں5+1 کے گروپ کے ساتھ اپنے ملک کے جوہری معاہدے کو منسوخ کرنے کی بھی دھمکی دی ہے۔

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>