"الشرق الاوسط" سے گفتگو کرتے ہوۓ انہوں نے کہا کہ ان کے ملک کو اقتصادی چیلنجز پر توجہ دینے کی ضرورت ہے - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعہ, 25 نومبر, 2016
0

"الشرق الاوسط” سے گفتگو کرتے ہوۓ انہوں نے کہا کہ ان کے ملک کو اقتصادی چیلنجز پر توجہ دینے کی ضرورت ہے

سیاسی تبدیلی میں ہم نے طویل وقت صرف کیا: تونسی صدر

%d9%8a%d9%88%d8%b3%d9%81-%d8%b4%d8%a7%d9%87%d8%af-%d8%b1%d8%a6%d9%8a%d8%b3-%d8%a7%d9%84%d8%ad%d9%83%d9%88%d9%85%d8%a9-%d8%a7%d9%84%d8%aa%d9%88%d9%86%d8%b3%d9%8a%d8%a9

تونسی صدر: یوسف شاہد

تونس: منجی سعیدانی

     تونسی صدر یوسف شاہد نے کہا کہ سنہ 2011ء میں ابن علی کی حکومت کے زوال کے بعد سے یکے بعد دیگرے آنے والی حکومتوں نے سیاسی مرحلہ کی تبدیلی میں کافی وقت صرف کیا ہے، تاہم انہوں نے   اعتراف کیا ہے کہ یہ کوشش  بھی  زیادہ سے زیادہ عدل و انصاف کے لئے سیاسی نظام  کی منتقلی کے حصول کی خاطر بہت ضروری تھی۔

     تونسی دارالحکومت میں "الشرق الاوسط” کو دئے گئے اپنے ایک بیان میں شاہد نے اس بات پر بھی زور دیا کہ ان کے ملک کے لئے یہ ضروری ہے کہ وہ اقتصادی اور سماجی چیلنجز کا سامنا کرنے پر زیادہ توجہ دے۔

     شاہد نے ” سرمایہ کار فورم ” جس کی  ماہ رواں کے آخر میں تونس میزبانی کرے گا میں خلیجی ممالک کو بڑے پیمانے پر شرکت کرنے کی دعوت دی ، انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا ہے کہ حکومت نے سرمایا کاری کے لئے بہتر حالات مہیا کردیۓ ہیں بایں طور پر کہ اس نے اقتصادی چھاپ پر مبنی قوانین کی بنیاد بھی رکھ دی ہے۔

     شاہد نے اپنی بات جاری رکھتے ہوۓ کہا کہ آنے والے مرحلے کے دوران تونس بہت ہی اہم اقتصادی آغاز کی جانب اقدام کرنے والا ہے۔

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>