مصر میں ابیدوس کے علاقے میں پہلے شاہی خاندان کے قدیم مقبروں کی دریافت - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
کو: جمعہ, 25 نومبر, 2016
0

مصر میں ابیدوس کے علاقے میں پہلے شاہی خاندان کے قدیم مقبروں کی دریافت

%d9%85%d9%82%d8%a8%d8%b1%d8%a9-%d8%a3%d8%ab%d8%b1%d9%8a%d8%a9

ایک مقبرہَ۔۔۔۔۔جس میں بڑا انسانی ڈھانچہ نظر آ رہا ہے

قاہرہ: ولید عبد الرحمٰن

      وزارتِ آثار کے تحت مصری آثار قدیمہ کے مشن نے (بالائے مصر) کے گورنریٹ سوھاج میں مصری ابیدوس کے علاقے میں واقع شاہ سیتی اول کے معبد سے جنوبی سمت میں 400 کلومیٹر کے فاصلہ پر قدیم قبرستان اور رہائشی شہر کی دریافت کا اعلان کیا ہے جس کا تعلق (5316 سال قبل از مسیح) شاہی خاندانوں کی ابتدا سے ہے۔

    وزارت آثار کے ادارے مصری آثار قدیمہ کے چیئرمین محمود عفیفی نے کہا کہ نجی شاہی جنازگاہ کی دیواروں سے اس بات کا امکان پایا جاتا ہے کہ ان مقبروں اور رہائشی شہر کا تعلق ابیدوس میں اول شاہی خاندان کے حکمرانوں اور بڑے عہدے داروں سے ہے۔ دریں اثناء آثار قدیمہ کے ذرائع نے "الشرق الاوسط” سے کہا کہ "مقبرے بہت اچھی حالت میں ہیں اور یہ شہر کہ جس کی تعمیر کی تاریخ تقریبا 7 ہزار سال پرانی ہے، اس میں قدیم گھر اور بڑے بڑے مقبروں کے علاوہ بہت سے چینی کے برتن اور پرانے اوزار شامل ہیں۔

      ابیدوس شہر جسے ہیروغلیفی زبان میں "اببدجو” کہتے ہیں اور یہ سوھاج کے شہر "بلینا” کے مغربی جانب واقع ہے جو بالائے مصر کے قدیم شہروں میں سے ایک تھا۔ آثار قدیمہ کے اکثر ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ ما قبل شاہی خاندان سے لے کر پہلے چار شاہی خاندانوں تک مصر کا پہلا دارالحکومت تھا۔

متعلقہ عنوانات‬:, ,
شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>