پھانسی پر نکتہ چینی کرنے والی اپنے والد کی ریکارڈنگ لیک کرنے پر 21 سال قید کی سزا - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: پیر, 28 نومبر, 2016
0

پھانسی پر نکتہ چینی کرنے والی اپنے والد کی ریکارڈنگ لیک کرنے پر 21 سال قید کی سزا

%d8%a3%d8%ad%d9%85%d8%af-%d9%85%d9%86%d8%aa%d8%b8%d8%b1%d9%8a

آیۃ اللہ منتظری کے صاحبزادے احمد منتظری (الشرق الاوسط)

طہران لندن: "الشرق الاوسط”

     آیۃ اللہ منتظری جو آیۃ اللہ خمینی کی قیادت میں ایرانی سرکار کے بڑے ذمہ داروں میں سے تھے ان کے صاحبزادے احمد منتظری کو کل ایک ایرانی عدالت نے 21 سال قید کی سزا سنائی ہے، ان پر الزام یہ ہے کہ انہوں نے اپنے والد (آیۃ اللہ منتظری) کی اس خفیہ ریکارڈنگ کو لیک کیا ہے جس میں انہوں نے سنہ 1988ء میں دیئے گئے ہزارہا لوگوں کی پھانسی پر نکتہ چینی کی تھی۔

     فرانس پریس ایجینسی نے ایرانی "ایسنا” ایجینسی کے حوالے سے یہ کہا ہے کہ شہر قم میں دین جاننے والوں کی ایک خصوصی عدالت نے منتظری کو "ملک کی سلامتی کو خطرات میں ڈالنے” کے الزام میں 10 سال ، مزید 10 سال "خفیہ آڈیو ریکارڈنگ” کو منظرعام پر لانے کے پاداش میں اور ایک سال "سرکار کے خلاف” پروپیگنڈہ کرنے پر قید کی سزا سنائی ہے۔

     لیکن منتظری عملی طور پر جیل میں صرف 6 سال کی سزا کاٹیں گے، تخفیف کی وجہ بذات خود عدالت نے ہی پیش کیا ہے۔ یہ تخفیف ان کے (60 سال کی) عمر ہونے کو بھی شامل ہے، عدالت میں ان کا ریکارڈ بھی بالکل صاف وشفاف ہے اور ان کے سگے بھائی بھی "مجاہدین خلق” تنظیم کے ایک حملے میں مارے گئے تھے۔

     آیۃ اللہ منتظری یہ ایرانی انقلاب کے لیڈر آیۃ اللہ خمینی کے دایاں ہاتھ تھے، زیادہ تر لوگ انہیں خمینی کا جانشین بننے کی امید کرتے تھے، لیکن انہوں نے پھانسی سے متعلق اپنے نظریہ کی وجہ سے یہ مقام و مرتبہ کھو دیا۔ کافی دن بیمار رہنے کے بعد سنہ 2009ء میں ان کا انتقال ہوگیا۔

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>