حکومت کی فیصلہ کن جنگ سے حلب کے بے گھر افراد بمباری کی زد میں اور اقوام متحدہ کا "خطرناک صورت حال" سے انتباہ ۔ ہلال احمر سے مسلح عناصر کا انخلاء - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعرات, 1 دسمبر, 2016
0

حکومت کی فیصلہ کن جنگ سے حلب کے بے گھر افراد بمباری کی زد میں اور اقوام متحدہ کا "خطرناک صورت حال” سے انتباہ ۔ ہلال احمر سے مسلح عناصر کا انخلاء

%d8%ad%d9%84%d8%a8

کل مشرقی حلب سے حکومت کے زیر کنٹرول مغربی علاقوں کی جانب ہزاروں افراد کے کوچ کرنے کے دوران ایک خاتون کو اسکے خاندان کے ایک فرد نے اٹھا رکھا ہے۔

بیروت: نذیر رضا

        حلب کے علاقے میں  مخالف فوجی قیادت کے مطابق حلب میں لڑائی جاری ہونے سے معلوم ہوتا ہے کہ حکومت اور اس کے اتحادی فوج میں اضافہ کی مہم کے ساتھ پیش قدمی کرنے کاعزم رکھتے ہیں تاکہ گهيرے ہوئے تمام مشرقی علاقوں پر کنٹرول حاصل کیا جائے جن کے پاس "حتی کہ پینے کے پانی کی بھی کمی ہے”- انہوں نے "الشرق الاوسط” کو وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ "راکٹ لانچروں نے گولہ باری بند نہیں کی اوربمباری میں دو سو میزائل ایک ہی بار داغے جاتے ہیں- علاوہ ازیں دھماکہ خیز بیرل بم اور فضائی حملوں میں شامی مگ طیارے  اور روسی طیارے چھتریوں والے میزائل داغتے ہیں”۔

          اتحادی فوج کے ایک بڑے عہدہ دار (جو حکومت کی حمایت میں لڑ رہے ہیں) نے کل "رويئٹر” ایجنسی سے کہا کہ حکومتی فوج اور اس کے اتحادیوں کا مقصد آئندہ جنوری میں ںو منتخب امریکی صدر ڈونالڈ ٹرامب کے حکومت سنبھالنے سے قبل مخالفین کے ہاتھوں سے مشرقی حلب کا مکمل کنٹرول چھیننا ہے جو گزشتہ دنوں میں بڑی کامیابیوں کے حاصل ہونے کے بعد کاروائیوں کے لئے روس کے تائید کردہ ٹائم ٹیبل کی پابندی کر رہے ہیں۔

           کل حلب میں اقوام متحدہ کے انتباہ کے بعد فوجی پیش قدمی کی وجہ سے انسانی بحران شدید ترین ہوگیا- اقوام متحدہ نے مخالف دھڑوں کے زیر کنٹرول علاقوں کے اندر شامی حکومتی افواج کی تیزی سے پیش قدمی کے بعد شہر کے مشرقی علاقے کی صورت حال کو "خطرناک” قراردے دیا- جہاں سے تقریبا 16 ہزار شہری دیگر علاقوں کی جانب فرار ہوگئے جن میں سے بعض فرار ہوتے ہوئے بمباری کا شکار ہوگئے۔

           اس فوجی دباؤ میں، شامی حکومتی بمباری کی وجہ سے مخالف فوج "شامی ہلال احمر” کے تین بے اثر علاقوں سے نکل چکی ہے- یہ بستان القصر، کلاسہ اور مشہد یا سیف الدولہ کے علاقے ہو سکتے ہیں- اور یہ "راموسہ” کے مشرقی محاذ پر جنوب مغربی مضافات میں حکومت کے ساتھ کھلی فرنٹ لائن ہے-  جہاں سے مخالف جنگجو اپنے درمیانے درجے کے ضروری انفرادی اسلحہ کے ساتھ بعد میں ادلب کے مضافاتی علاقوں کی جانب نکل سکتے ہیں۔

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>