10 سال کی محنت وکوشش کے بعد اکرہ میں جعلی امریکی سفارت خانہ کے ہونے کا انکشاف - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: بدھ, 7 دسمبر, 2016
0

10 سال کی محنت وکوشش کے بعد اکرہ میں جعلی امریکی سفارت خانہ کے ہونے کا انکشاف

%da%af%da%be%d8%a7%d9%86%d8%a7

گانا کی دار الحکومت اکرہ میں جعلی امریکی سفارت خانہ کی عمارت

واشنگٹن: "الشرق الاوسط”

      دس سال تک جاری محنت وکوشش کے بعد گانا کی حکومت نے اپنی دارالحکومت اکرہ میں ایک جعلی امریکی سفارت خانہ کے ہونے کا انکشاف کیا ہے جیسا کہ امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان نے بھی اس کی تصدیق کی ہے۔

      فرانسیسی پریس ایجنسی نے اپنے ترجمان مارک ٹونر کے ذریعہ نقل کیا ہے کہ دھوکے بازوں نے خود کو قونصل خانہ کے عملہ کے طور پر پیش کیا اور جعلی ویزے بھی جاری کئے  لیکن انہوں نے مزید یہ بھی کہا کہ کوئی بھی ان جعلی ویزوں کے ذریعہ ریاستہائے متحدہ  امریکہ میں داخل نہیں ہوا جبکہ دھوکے بازوں نے سفر کے حقیقی دستاویزات سے ان ویزوں کوحاصل کیا تھا۔ ٹونر نے اس بات کی طرف بھی اشارہ کیا کہ ان دنوں امریکی جعلی ویزے بنانا بہت مشکل ہے اس لئے یہ کوشش ناکام ہو گئی۔

      ایک مدت دراز تک کام کرنے والی جعلی سفارت خانہ کی صلاحیت کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں ٹونر نے اس بات کی طرف اشارہ کیا کہ اس دھوکہ دہی کے شکار لوگ شکایت کرنے کے سلسلہ میں شرمندگی محسوس کر رہے تھے، لیکن یقینی طور پر وہ لوگ غیر قانونی امریکی جعلی ویزا حاصل کرنے کی وجہ سے پولیس کے پاس نہیں جائیں گے۔

      مقامی حکومت کے ایک ذریعہ نے بھی اکرہ میں ایک ہالنڈ کی جعلی سفارت خانہ کی موجودگی کے سلسلہ میں آگاہ کیا ہے۔اس سلسلہ میں ہالنڈ کی وزارت خارجہ کے ایک ترجمان دافنی کریمانس نے فرانسیسی پریس ایجنسی کو یقین دہانی کرائی ہے کہ اس موضوع کے سلسلہ میں تحقیقات جاری ہیں۔

 

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>