طیارے کے حادثہ سے متاثرین کے لئے پاکستان کی طرف سے سوگ کا اعلان - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعرات, 8 دسمبر, 2016
0

طیارے کے حادثہ سے متاثرین کے لئے پاکستان کی طرف سے سوگ کا اعلان

20161208t052220-1481174540036284900

 

لندن: "الشرق الاوسط اون لاين”

 

    آج (بروز جمعرات) پاکستان نے 47 افراد کے جاں بحق ہونے پر سوگ کا اعلان کیا ہے جو ملکی تاریخ میں کسی پرواز کا بد ترین حادثہ ہے۔ حادثے کے شکار ہونے والوں میں پاکستانی مشہور پاپ اسٹار جو بعد میں اسلامی مبلغ بنے، انکے علاوہ اس میں دو بچے اور تین غیر ملکی افراد بھی شامل ہیں جبکہ ابھی ذمہ داران حادثہ کی وجوہات جاننے کی کوشش کر رہے ہیں۔

    ابتداء میں یہ خیال کیا جا رہا تھا کہ انجن میں خرابی حادثے کی وجہ بنی، لیکن پھر بھی بہت سے سوالات ایسے ہیں جو خسارے کا شکار حکومتی ملکیتی پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائن کے ادارے کے حفاظتی ریکارڈ کے بارے میں نئے خدشات ابھارتے ہیں۔

دریں اثناء، کمپنی کے سربراہ محمد عزام سہگل نے کہا کہ گر کر تباہ ہونے والے ہوائی جہاز کی کمپنی نے گذشتہ اکتوبر میں "پہلے درجے کی چیکنگ” کی سرٹیفکیٹ کے حصول کے لئے اسے چیک کروایا تھا۔

    انہوں نے مزید کہا کہ "میں وضاحت کرنا چاہوں گا کہ یہ جہاز بالکل صحیح تھا” اور کسی بھی انسانی یا تکنیکی خرابی سے پاک تھا۔ انہوں نے کہا کہ لگتا ہے کہ جہاز کے گرنے سے قبل اس کے ایک انجن میں خرابی پیدا ہوگئی تھی جو کہ جاری تحقیقات سے واضح ہوگی۔

       انہوں نے کل آخری وقت میں پریس کانفرنس میں وضاحت کی کہ "میں نہیں سمجھتا کہ یہ حادثہ کسی انسانی غلطی یا تکنیکی خرابی کی وجہ سے ہوا – اس پر مناسب تحقیقات پوری کی جائیں گی”۔

     کل پاکستان کے مشہور سیاحتی مقام چترال سے بعد از ظہر پرواز کے بعد صوبۂ خیبر پختون خواہ کے پہاڑی علاقے حویلیاں کے قریب جہاز کے گرے کے حادثہ کے بعد انٹرنیٹ پر غم کا سیلاب سا امڈ آیا۔

     پرواز کو یہ حادثہ اسکی منزل دارالحکومت اسلام آباد کے انٹرنیشنل ایئر پورٹ سے 50 کلومیٹر کے فاصلے پر پیش آیا۔

     جنید جمشید پر سب سے زیادہ افسوس کا اظہار کیا گیا وہ مشہور پاکستانی پاپ اسٹار تھے جو بعد میں گلوکاری کو چھوڑ کر تبلیغی جماعت میں شامل ہوگئے تھے۔ حادثے کا شکار ہونے والے جہاز میں دو بچے، تین غیر ملکی افراد اور پانچ پرواز کے عملے کے ارکان ہیں.

     اسے فرانسیسی کمپنی نے سن 2007 میں تیار کیا اور پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائن کی کمپنی میں شامل ہونے کے بعد سے یہ جہاز 18739 گھنٹوں کی پرواز کر چکا تھا۔

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>