اغو ا شدہ فوجیوں کی فائل کے سلسلہ میں ایک نئے لبنانی سفارشی - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: اتوار, 1 جنوری, 2017
0

اغو ا شدہ فوجیوں کی فائل کے سلسلہ میں ایک نئے لبنانی سفارشی

3

لبنانی وزیر اعظم سعد حریری اپنی حکومت کی تشکیل کے سلسلہ میں ووٹنگ ہونے سے پہلے پارلیمنٹ پہنچنے ہویے

بیروت: "الشرق الاوسط”

        جنرل سیکیورٹی کے سربراہ میجر جنرل عباس ابراہیم نے کل اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ لبنان کے ایک نئے سفارشی  نے”داعش” کی طرف سے اگست 2014 میں اغوا  کیے گئے 9 لبنانی فوجیوں کی فائل کو حل کرنے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

        جنرل ابراہیم نے پرزور انداز میں کہا ہے کہ لبنانی حکومت اس فائل کو ختم کرنے پر مصر ہے۔ انہوں نے اپنی امید کا اظہار کرتے ہویے کہا کہ اس نئے سال میں اغوا کیے گئے 9 لبنانی فوجیوں کی فائل کے حل ہونے کی خوشخبریاں ہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ممکن ہے کہ اسم مسئلہ میں وقت بہت لگ چکا  ہے لیکن اگر ہم نے اپنے مطلوبہ چیز کو حاصل کر لیا  تو پھر وقت کے سلسلہ میں کوئی شکوہ نہیں۔

        انہوں نے اس بات کی وضاحت کی کہ ہم اس مسئلہ کو از سرے نو شروع کرنا نہیں چاہتے ہیں۔ اس مسئلہ میں ہمیشہ کئی سفارشی رہے ہیں لیکن آج  ایک نئے لبنانی سفارشی  ہیں جو اس فائل کو حل کرنے کی کوشش کررہے ہیں   اور متعدد مشن کو مکمل کرنے کی بھی تکلیف برداشت کررہے ہیں  ۔

        اسی سے متعلق اغوا شدہ فوجی محمد یوسف کے والد حسین یوسف نے "الشرق الاوسط” سے گفتگو کرتے ہویے بتایا کہ نئے سفارشی کی قیادت میں ثالثی بہت سنجیدہ لگ  رہی  ہے  اور یہ پچھلے سفارشیوں کے مقابلہ میں زیادہ مؤثر  اور متحرک وفعال ہیں۔ انہوں اس بات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ موصوف کو یہ فا‏ئل ایک ماہ قبل موصول ہوئی ہے لیکن ابھی تک ان کے  رابطوں اور کوششوں کا کوئی نتیجہ سامنے نہیں آیا ہے۔

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>