استنبول قتل عام کا ملزم "ابو محمد الخراسانی" - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
کو: جمعرات, 5 جنوری, 2017
0

استنبول قتل عام کا ملزم "ابو محمد الخراسانی”

1483552250848838300

(استنبول میں "رینا” کلب پر دہشت گردانہ حملے میں جاں بحق ہونے والے افراد کے لئے ترک دعا کرتے ہوئے (ا.ف.ب

انقرہ: سعيد عبد الرازق

       کل ترک وزیر خارجہ مولود جاویش اوغلو نے اعلان کیا کہ سیکورٹی حکام نے استنبول حملہ آور کی شناخت کر لی ہے،یاد رہے کہ اس حملہ میں 39 افراد ہلاک اور 65 زخمی ہوئےتھے، دریں اثنا سیکورٹی فورسز نے حملہ کے ساتھ ممکنہ تعلق کی بنا پر ازمیر (شمال مغربی ترکی) میں درجنوں افراد کو بند کر دیا۔

      حکومت کے قریبی اطلاعاتی ذرائع نے بتایا ہے کہ سیکورٹی حکام اور انٹیلی جنس سروسز "نئے ایشیائی” باشندے "ابو محمد الخراسانی” نامی شخص کو ملزم قرار دے رہی ہے۔ تمام صحافتی ذرائع کا کہنا ہے کہ دہشت گرد تنظیم داعش سے منسلک ایک مضبوط نیٹ ورک کی حمایت کے باعث حملہ آور آزادانہ طور پر گھوم رہا ہے، ترکی میں اس نیٹ ورک کا رہنما یوسف خوجہ ہے۔

       ترک حکومت کی قریبی خاتون صحافی "ینی شفق” نے کہا کہ مشتبہ شخص اپنی بیوی اور دو بچوں کو حملہ سے بچانے کی خاطر اناضول کے وسطی شہر قونیہ میں بھیجنے سے قبل ان کے ہمراہ استنبول میں رہائش پذیر تھا۔ انہوں نے اشارہ کیا کہ ترک حکومت نے مطلوبہ شخص کو گرفتار کرنے کے لئے نئے سخت اقدامات اپناتے ہوئے اس کا موبائل فون اور اس کی بعض دستاویزات کو قبضہ میں لے لیا ہے جسے وہ اٹھائے ہوئے تھا۔

      دوسری جانب "دوغان” نامی ایجنسی نے کہا کہ کل صبح پولیس نے ازمیر کے بوجا محلے میں تین خاندانوں کے 27 افراد کو روکا جو 15 روز قبل قونیہ سے یہاں آئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ پولیس نے قونیہ میں ان کے پتہ پر کئی بار چھاپے مارے مگر وہ انہیں نہ مل سکے۔

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>