شمالی موصل میں عراقی دراندازی - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: ہفتہ, 7 جنوری, 2017
0

شمالی موصل میں عراقی دراندازی

2

کل بغداد میں نامعلوم فوجی کی یادگارکے قریب عراق کے صدر فؤاد معصوم فوج کے یوم تاسیس کی یاد میں منعقدہ ایک تقریب کے دوران

بغداد، موصل: "الشرق الا وسط”

        17 اکتوبر  2016 کو شروع ہونے والی داعش کے چنگل سے موصل کو آزاد کرانے کی مہم میں کل اور پرسو دو اہم اقدامات کئے گئے ہیں۔  پہلا اقدام یہ ہے  کہ شہر کے شمال میں عراقی فورسز داخل ہو چکی ہے اور دوسرا اقدام یہ ہے کہ رات کے وقت حملہ کرکے  شہر کے دائیں جانب کے ایک گاؤں کو واپس لے لیا گیا ہے۔

        "آرہے ہیں نینوی” نامی آپریشن کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل عبد الامیر رشید یار اللہ نے ایک بیان میں پر وزر انداز میں کہا کہ موصل کے بائیں جانب شمال میں واقع ” شقق الحدباء” نامی علاقہ پر عراقی فورسز کا کنٹرول ہو گیا ہے اور وہاں کی عمارتوں پر عراقی پرچم لہراد یا گیا ہے۔

        اس سلسلہ میں عراقی انسداد دہشت گردی تنظیم کے ایک ترجمان صباح نعمان  نے کل اعلان کیا کہ انسداد  دہشت گردی فورسز نے گزشتہ رات حملہ کرکے "داعش” کو "المثنی” نامی علاقہ میں اس وقت جا پکڑا جب وہ بائیں جانب میں دریا دجلہ کی ایک شاخ کو پار کر رہے تھے۔

         دوسری طرف اس بات کی توقع ہے کہ ترکی کے وزیر اعظم بن علی یلدرم آج عراق کا سرکاری دورہ کریں گے۔ وہ پہلے بغداد پھر اربیل کی زیارت کریں گے اور بظاہر ایسا لگ رہا ہے کہ وہ گزشتہ سالوں میں دونوں ملکوں کے درمیان ہوئی کشیدگی کو ختم کرکے تعلقات کو بحال کرنے کی کوشش کریں گے۔

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>