اسرائیل کی طرف سے حماس پر فوجی خفیہ معلومات حاصل کرنے کی کوشش کا الزام - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعرات, 12 جنوری, 2017
0

اسرائیل کی طرف سے حماس پر فوجی خفیہ معلومات حاصل کرنے کی کوشش کا الزام

3

تل ابیب: "الشرق الاوسط”

        اسرائیلی فوج نے کل اعلان کیا ہے کہ تحریک حماس خوبصورت خواتین کی تصویروں کے ذریعہ فوجیوں اور افسران کو فریفتہ کر کے ان سے خفیہ معلومات حاصل کرنے کی کوشش کر رہی ہے،

        فوج میں خفیہ معلومات کے ایک یونٹ نے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ سولہ غیر حقیقی شخصیت ہیں جن کے لئے تحریک حماس سوشل نیٹ ورک پر تصویریں شائع کر رہی ہے اور  ان کے ذریعہ فوجیوں کو خواتین سے متعلف اپلیکیشن ڈاؤن لوڈ آمادہ کر رہی ہے تاکہ موبائل فونز ان کے  تابع ہوں اور حساس معلومات کے لئے کھلے ہوں۔

        اسرائیلی فوج کے ترجمان "اوویجا ادری” نے کہا کہ فوج اور جنرل سیکیورٹی سروس کی ایک خاص ٹولی نے گزشتہ مہینوں میں بڑے پیمانے پر مہم شروع کیا تھا جس کے ذریعہ ٹولی چند ایسے گروپوں کی نگرانی کرنے میں کامیاب ہوئی تھی جو موبائل کو توڑنے کی کوشش کر رہی تھی اور حماس کی طرف سے ان الزامات پر کوئی فوری تبصرہ نہیں آیا ہے۔

        اسی دوران کل اسرائیل کے تمام عرب شہروں میں عام ہڑتال ہوا ہے اور اس کی وجہ یہ ہے کہ قلنسوة نامی شہر میں نو گھروں یہ کہ کر منہدم کر دیا گیا کہ یہ گھر اجازت نامہ کے بغیر بنائے گئے ہیں۔

        48 فلسطینیوں کے رہنماؤں نے احتجاجی مہم کو جاری رکھتے ہوئے کل نماز جمعہ کے بعد مظاہرہ نکالنے کا فیصلہ کیا ہے۔ "مشترک فہرست” کے صدر ایمن عودہ نے کہا کہ "قلنسوة” میں بڑے پیمانے پر توڑ پھوڑ اور اس سے قبل "النقب” میں توڑ پھوڑ ہمارے سامنے ایک لال بتی ہے جو  ہمارے لئے اپنے ہی ملک میں ایک دھمکی کے مترادف ہے۔

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>