"پیرس کانفرنس" دو ریاستی حل کی توثیق - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
کو: پیر, 16 جنوری, 2017
0

"پیرس کانفرنس” دو ریاستی حل کی توثیق

عرب امن میں پہل کاری کی اہمیت پر زور اور 67 کی سرحدیں اس کا بنیادی حل
8klr87krkr8kr8kr7lr78lr78r

کل فرانسیسی دارالحکومت پیرس میں منعقدہ مشرق وسطی امن کانفرنس میں صدر ہولانڈ تقریبا 70 ممالک کے نمائندوں کے درمیان (ا۔ب۔ا)

پیرس: میشال ابو نجم

       کل پیرس کانفرنس میں فلسطینی اسرائیلی تنازعے کے دو ریاستی حل پر زور دیا گیا کہ جس کے حل کی بنیاد سنہ 1967 کی سرحد کے مطابق ہوگی۔ جیسا کہ شرکا نے اپنے اختتامی بیان میں اس بات کا اظہار کیا کہ وہ مذاکرات کے ذریعے دو ریاستی حل تک پہنچنے کے لئے فریقین کی کوششوں کی حمایت کی خاطر رواں سال کے اختتام سے قبل دوبارہ اجلاس منعقد کرنے کو تیار ہیں۔ علاوہ ازیں اختتامی بیان میں جامع حل اور علاقائی امن و سلامتی کے حصول کے لئے عرب امن میں پہل کاری کی بھی یقین دہانی کی گئی۔

        کل پیرس کی میزبانی میں مشرق وسطی میں امن کے لئے منعقدہ یہ کانفرنس سخت حفاظتی انتظامات میں دن بھر جاری رہی۔

      اس میں دلچسپ امر یہ کہ دونوں فریق اسرائیل اور فلسطین اس (کانفرنس) سے غائب تھے۔ مگر اس کے باوجود اسرائیلی وزیراعظم بینامین نتن یاہو نے اس کانفرنس پر زبانی حملہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ "فرانسیسی غلاف میں فلسطینی فریب ہے”۔ جبکہ فلسطینی ذرائع کی رپورٹ کے فلسطینی صدر محمود عباس؛ جنہوں نے در حقیقت ہفتہ کی شام روم سے براہ راست پیرس پہنچنا تھا، فرانسیسی حکام نے ان سے درخواست کی کہ وہ اپنے دورہ کو دو ہفتے کے لئے مؤخر کر دیں۔

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>