داعش کی رقہ سے دیر الزور کی طرف اجتماعی ہجرت - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: اتوار, 22 جنوری, 2017
0

داعش کی رقہ سے دیر الزور کی طرف اجتماعی ہجرت

"آستانہ” میں واشنگٹن کی شرکت پر ماسکو کا تہران سے اختلاف کا اعتراف
اتوار­ 24 ربيع الثانی 1438 ہجری ­ 22 جنوری 2017 ء  شمارہ: (13935)
1485020537791157500

ایک شامی خاتون کل حلب کے الشعار محلے میں عمارتوں کے ملبے کے پاس سے گزر رہی ہے (ا.ف.ب)

 

ماسكو: طہ عبد الواحد ، رياض – بيروت: "الشرق الاوسط”

        عینی شاہدین کے مطابق کل "داعش” کی لیڈروں  اور مسلح عناصر کو اجتماعی شکل میں رقہ سے دیر الزور جاتے ہوئے دیکھا گیا۔ دوسری جانب شامی فائل کی کچھ امور کے بارے میں ایران کے ساتھ اختلافات پر کرملین نے خاموشی کو توڑا ہے۔ ان اختلافات میں ماسکو اور تہران کے مابین "آستانہ” مذاکرات میں واشنگٹن کے نمائندوں کی شرکت پر حالیہ اختلاف اہم ہے۔

      رقہ شہر کے رہائشی افراد نے جرمن اخباری ایجنسی کو کہا کہ سینکڑوں لیڈر اور تنظیم کے عناصر سال رواں کے آغاز سے گورنریٹ دیر الزور کی جانب نقل مکانی کر گئے ہیں۔ نقل مکانی کرنے والوں میں اکثریت (عرب اور غیر ملکی جنگجوؤں)  مہاجرین کی ہے۔ تنظیم کے لیڈروں نے "الفردوس، الثکنہ اور الحرامیہ کے محلوں میں درجنوں مکانات کو خالی کر دیا ہے”۔۔۔

      دریں اثناء، سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کل ریاض میں شامی انقلاب کی فورسز کے جنرل کوآرڈینیٹر رياض حجاب کا خیر مقدم کیا۔ ملاقات کے دوران ان کے ساتھ شام کی صورتحال میں پیش رفت اور بحران کے حل کے لئے بین الاقوامی کوششوں پر تبادلۂ خیال کیا۔

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>