امریکی عدلیہ سفری پابندی کو منجمد کر رہی ہے - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
کو: اتوار, 5 فروری, 2017
0

امریکی عدلیہ سفری پابندی کو منجمد کر رہی ہے

تہران کا "فضائی مشقوں” کے ذریعے امریکی دھمکیوں کا جواب
news-040217-1

کل ایک ایرانی طالب علم بوسٹن میں لوگان ایئر پورٹ پہنچنے پر اپنی بھائی کو گلے لگاتے ہوئے (رویٹرز)

واشنگٹن: منير الماوری ­- لندن: عادل السالمی

       جب ریاست ہائے متحدہ امریکہ صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی طرف سے منظور کردہ سفری پابندیوں کو ایک وفاقی جج کے فیصلے کے ذریعے منجمد کرنے میں مصروف تھا، اسی اثناء میں کل ایران نے 25 افراد اور اداروں کے خلاف امریکہ کی طرف سے عائد پابندیوں کا جواب فضائی مشقوں اور دھمکیوں کے اجراء کے ساتھ دیا ہے۔

      امریکی وزارت خارجہ اور اندرون ملک سیکورٹی کی وزارت کی نمائندہ فیڈرل حکومت نے کہا کہ وفاقی حکام نے تقریبا 60 ہزار ویزے؛ جن کا داخلہ منسوخ کر دیا تھا، ان کی دوبارہ ایکٹیویشن کی کر دی ہے، اب اس ویزے کے حامل افراد صدر ٹرمپ کے فیصلے کی حتمی آئینی حیثیت کے تعین تک ملک میں داخل ہو سکتے ہیں۔ اگر اس مسٔلہ کو حل نہ کیا گیا تو یہ فیصلہ امریکی سپریم کورٹ کے سپرد کر دیا جائے گا۔

      یہ واقعات ریاست واشنگٹن کے شہر سیاٹل کے وفاقی جج "جیمز روبارٹ” کی طرف سے جاری کردہ ابتدائی فیصلہ پر ہے جس پر اپیل کی جا سکتی ہے۔ اس فیصلہ کے تحت تمام ریاستوں میں صدارتی حکم پر عمل کو روک دیا گیا ہے۔ عدالت کے اس فیصلہ پر امریکی صدر غصے میں آگئے اور اسے "مضحکہ خیز قرار دیا اور کہا کہ  جلد ہی اسے منسوخ کر دیا جائے گا”، انہوں نے مزید کہا کہ "جو خود کو جج کہتے ہیں وہ ملکی سیکورٹی کو خطرہ سے دوچار کر رہے ہیں”۔ ٹرمپ نے کہا کہ قانونی جنگ ابھی بھی جاری ہے اور یہ اپنے انجام کو نہیں پہنچی، انہوں نے اس ابتدائی فیصلے کو چیلنج کرنے کے عزم کا بھی اظہار کیا۔

      امریکہ ایران کشیدگی میں اضافہ کے ضمن میں کل ایرانی پاسداران انقلاب نے مزید اقدامات کرتے ہوئے ریڈار اور میزائل سسٹم پر مشتمل فضائی مشقوں کا آغاز کیا، اس دوران پاسداران انقلاب میں میزائل یونٹ کے کمانڈر نے امریکہ کی طرف سے ایران پر حملہ کرنے میں پہل کرنے کی صورت میں اس پر میزائل سے حملہ کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔

 اتوار 9 جمادى الاول 1438 ہجری /­ 05 فروری 2017 ء  شمارہ: (13949)
شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>