بدھ کے دن آستانہ کانفرنس جینیوا کانفرنس کی تمہید اور حزب اختلاف کے وفد میں سیاستدانوں کی اکثریت - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: اتوار, 12 فروری, 2017
0

بدھ کے دن آستانہ کانفرنس جینیوا کانفرنس کی تمہید اور حزب اختلاف کے وفد میں سیاستدانوں کی اکثریت

2

آزاد شامی افواج کے اہلکار الباب شہر کی طرف جاتے ہوئے

رياض: فتح الرحمن يوسف

        قزاقستان نے شامی بحران کے فریقین کو آئندہ بدھ کو آستانہ میں منعقد ہونے والے کانفرنس میں بلایا ہے۔ کل ریاض میں حزب اختلاف نے جینوا کے مذاکرات کے وفد کا انتخاب کیا ہے۔ درع فرات فورسز الباب شہر میں داخل ہو چکی ہے اور چند گھنٹوں میں اس کے مرکزی علاقہ میں داخل ہونے کی امید ہے۔

        کل قزاقستان کی وزارت خارجہ نے اعلان کیا ہے کہ اس نے حکومت، اپوزیشن اور شام کی طرف اقوام متحدہ کے ایلچی کو سیاسی پہلو پر توجہ مرکوز کرنے کے لئے میدانی مسائل کو حل کر کے جنیوا مذاکرات کے نئے دور کے تمہیدی اجلاس کے لئے مدعو کیا ہے اور کہا کہ ان مذاکرات کا مقصد جنگ بندی معاہدہ پر عمل درآمد کرنا، خاص علاقوں میں استحکام کے نفاذ کے لئے کاروائی کرنا، کام کی مشترکہ جماعت کے لئے قوانین بنانا اور جنگ بندی کو نافذ کرنے کے لئے دیگر تدبیروں کے سلسلہ میں معاہدہ کرنا ہے۔

        جنیوا کی طرف جانے والا اپوزیشن کا وفد 20 رکن اور 20 مشیر کار پر مشتمل ہوگا لیکن ان میں محمد صبرا کا بڑا رول ہوگا۔ فوجیوں کے بجائے سیاستدانوں کو مذاکرات کی ذمہ داری دینے کے مقصد سے سابق انتخاب کے ارکان کی بڑی تعداد نکل چکی ہے۔ قاہرہ اور موسکو کی نمائندگی کے لئے دو سیٹیں مخصوص ہین لیکن ان دونوں نے ابھی اس سلسلہ میں اپنے موقف کا اظہار نہیں کیا ہے۔

اتوار 16 جمادی الاول 1438 ہجری – 12 فروری 2017 شمارہ نمبر {13956}

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>