شاہ سلمان کا دہشت گردی اور مداخلت کے خلاف موقف پر زور - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
به قلم:
کو: جمعہ, 3 مارچ, 2017
0

شاہ سلمان کا دہشت گردی اور مداخلت کے خلاف موقف پر زور

انڈونیشی پارلیمنٹ کے سامنے مربوط کوششوں پر زور اور ممتاز اسلامی شخصیات کے ساتھ ملاقات
1488480172312626100

خادم حرمین شریفین کل انڈونیشی پارلیمنٹ سے خطاب کرتے ہوئے (رویٹرز)

 

جکارتہ: "الشرق الاوسط”

      خادم حرمین شریفین نے انڈونیشیا کے دورہ کے دوران انتہا پسندی، دہشت گردی اور غیر ملکی مداخلت کے سامنے ڈٹے رہنے کا مطالبہ کیا اور کل انہوں نے انڈونیشی ایوان نمائندگان سے خطاب کے دوران امت مسلمہ اور دنیا کو درپیش چیلنجز کا سامنا کرنے کی ضرورت پر زور دیا،”جن میں سرفہرست انتہاپسندی اور دہشت گردی کے رجحانات، ثقافتوں کا تصادم اور ریاستوں کی خود مختاری کے احترام میں کمی کے باعث ان کے اندرونی معاملات میں مداخلت کرنا شامل ہیں۔” انہوں نے بھرپور انداز میں کہا کہ یہ سب امور ہم سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ہم ایک صف کی مانند ان چیلنجز کے سامنے کھڑے ہوں، ہم ایسے مربوط مؤقف اور کوششوں کو اپنائیں جو ہمارے مشترکہ مفادات اور بین الاقوامی امن وسلامتی کے لئے ضروری ہوں”۔

      علاوہ ازیں انڈونیشی ایوان نمائندگان کے سربراہ ستیا نوانتو نے شاہ سلمان کی جانب سے ان کے ملک کا دورہ کرنے پر انکی ستائش کی اور اسے تاریخی دورہ قرار دیا، اسی طرح "سعودی وژن 2030” اور اس کے اہداف کی قدر کی۔

      کل شام خادم حرمین شریفین نے دارالحکومت جکارتہ کے صدارتی محل مردکا میں انڈونیشیا کے صدر جوکر ویڈوڈو کی موجودگی میں انڈونیشیا کی اہم مسلم شخصیات سے ملاقات کی اور اپنی مسرت کا اظہار کرتے ہوئے دونوں ملکوں کو آپس میں جوڑنے کی مختلف راہوں  اور کوششوں پر ان کو سراہا، جس میں خاص طور سے "وحدت عقیدہ” ہے۔

     خادم حرمین شریفین سے ملاقات کرنے والی مسلم شخصیات نے اسلام اور امت مسلمہ کی خدمت کے لئے ان کی کاوشوں اور اہتمام کو سراہا۔

 

جمعہ 4 جمادى الثانی 1438 ہجری­ 03 مارچ 2017ء شمارہ: (13975)

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>