"صدی کے کیس" میں حسنی مبارک کی حتمی بریت - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
کو: جمعہ, 3 مارچ, 2017
0

"صدی کے کیس” میں حسنی مبارک کی حتمی بریت

1488479353662485100

مبارک کو ہیلی کاپٹر سے نیو قاہرہ کے مضافات میں واقع پولیس اکیڈمی منتقل کیا جا رہا ہے جہاں کل ان پر مقدمے کی سماعت کی گئی (ا.ب.ا)

 

قاہرہ: وليد عبد الرحمن

      کل مصر کی سیشن کورٹ نے سابق صدر حسنی مبارک کو 25 جنوری 2011 کے انقلاب کے دوران مظاہرین کو قتل کرنے کے مقدمہ؛ جو کہ میڈیا میں صدی کے کیس” کے نام سے مشہور ہے، اس میں بری کر دیا ہے۔ یہ فیصلہ اس مقدمے پر پردہ ڈالنے کے لئے ہے جو کہ مصری اور عالمی رائے عامہ کا مرکز بنا ہوا تھا، جبکہ یہ فیصلہ حتمی اور ناقابل اپیل ہے۔

      کل سینٹرل قاہرہ میں واقع ہائی کورٹ سے باہر مشرقی قاہرہ میں واقع پولیس اکیڈمی میں پہلی بار اس مقدمہ کی سماعت کی گئی۔ جبکہ اس دوران مصر کی گلیوں میں اداسی چھائی رہی، جو کہ اس سے زیادہ اہم مسائل کے سبب سے ہے، جن میں سرفہرست مہنگائی، زندگی کا دباؤ اور ملک میں عدم استحکام کا شکار سلامتی کی صورت حال ہے۔

      اس سے قبل قاہرہ کی کریمنل کورٹ نے مبارک اور سابق وزیر داخلہ حبیب العادلی کو عمر قید کی سزا سنائی تھی اور العادلی کے 6 معاون افراد کو جون 2012 میں بری کر دیا گیا تھا۔ یہ وہ فیصلہ تھا جسے سیشن کورٹ نے جنوری 2013 میں منسوخ کر کے نئے سرے سے ٹرائل کا فیصلہ کیا تھا۔

جمعہ 4 جمادى الثانی 1438 ہجری­ 03 مارچ 2017ء شمارہ: (13975)
شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>