پینٹاگون کی "الرقہ"کے لئے منصوبہ بندی اور ترکی کے تحفظات نظر انداز - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: پیر, 6 مارچ, 2017
0

پینٹاگون کی "الرقہ”کے لئے منصوبہ بندی اور ترکی کے تحفظات نظر انداز

کردوں کی حمایت، امریکی فوج میں اضافہ اور فیلڈ کمانڈروں کو کھلی چھٹی دینے پر مشتمل منصوبہ
1488734940041623400

حلب کے مضافاتی شہر الباب کو "فرات کی ڈھال” نامی فوج کے ذریعے "داعش” سے آزاد کرائے جانے کے بعد ایک بے گھر خاندان موٹر سائیکل؛ جو کہ علاقے میں سواری کے لئے زیادہ تر استعمال کی جاتی ہے، پر واپس اپنے گھر لوٹتے ہوئے (غیتی)

 

واشنگٹن: كارين ڈی يونگ – ليز سلائے

      انکشاف ہوا ہے کہ صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے مطالبہ پر امریکی وزارت دفاع (پینٹاگون) کی طرف سے (شامی شہر) الرقہ کو آزاد کرانے کی کاروائی سے متعلق منصوبہ بندی میں؛ خاص طور سے کرد "عوامی حفاظتی یونٹس” کو شامل کر کے، ترکی کے تحفظات کو نظر انداز کر دیا گیا ہے۔

      گذشتہ پیر کے روز یہ منصوبہ ٹرمپ کو پیش کیا گیا، جس کی تیاری کے لئے "پینٹاگون” کو 30 روزہ مہلت دی گئی تھی۔ اس منصوبہ بندی پر صدر سے منظوری لینے میں ترکی کا مطالبہ بھی شامل ہے ،جس  کے مطابق  الباب شہر کو کرد ڈیموکریٹک پارٹی کے ماتحت عوامی حفاظتی یونٹس کے سامنے بند کر دیا جائے۔ کیونکہ انقرہ اسے امریکی ساز وسامان سے لیس دہشت گرد تنظیم اور شہر پر حملہ آور قرار دیتا ہے۔ اس منصوبہ میں اسپیشل امریکی فورسز، حملہ آور ہیلی کاپٹر اور توپوں کو پھیلانے کا مطالبہ بھی کیا گیا ہے۔ علاوہ ازیں "ڈیموکریٹک شامی افواج”؛ جن پر کرد غالب ہیں، انہیں ہتھیاروں  کی کمک دینے اور امریکی حکام کی رپورٹ کے مطابق فیلڈ کمانڈروں کو کھلی چھٹی دینے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

پیر 7 جمادى الثانی 1438 ہجری ­ 06 مارچ 2017 ء  شمارہ: (13978)
الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>