جمہوریہ اتا ترک، اردگان کی چادر کے نیچے - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
کو: پیر, 17 اپریل, 2017
0

جمہوریہ اتا ترک، اردگان کی چادر کے نیچے

ترک صدر ترامیم کے بارے میں کہتے ہیں کہ "یہ ہماری تاریخ میں سب سے اہم اصلاحات ہیں”… مخالفین کا نتائج کو چیلنج کرنے کی دھمکی

w57klsw57klsw57klsw57k

اردگان کل اپنا ووٹ کاسٹ کرتے ہوئے…اور ان کے حامی آئینی ترامیم کی منظوری پر انقرہ میں جشن مناتے ہوئے (ا.ف.ب)

 

انقرہ: سعيد عبد الرازق – ثائر عباس

      کل ترک عوام نے تنگ نظری کے خلاف آئینی ترامیم  کے حق میں ریفرنڈم میں اپنا حق رائے استعمال کیا، تاکہ سیکولر بنیادوں پر سنہ 1923 میں کمال اتا ترک کی قائم کردہ جمہوریہ ترک کو صدر رجب طیب اردگان اور ان کے نئے صدراتی نظام کی چادر تلے لایا جائے۔

      ترک سرکاری اخباری ایجنسی "اناطولیہ” نے کہا ہے کہ آئینی ترامیم کے حق میں عوام نے 51٫25 فیصد رائے دی اور مخالفت میں 48٫75 فیصد، جبکہ اس رائے شماری میں حصہ لینے والوں کی نسبت 80 فیصد رہی ہے۔ اس طرح سے ترک صدر اردگان کا اپنے اختیارات کو وسیع کرنے کا "خواب” مکمل ہوتا نظر آ رہا ہے اور وہ 2029 تک بطور صدر رہنے کے لئے اپنی راہ ہموار کر چکے ہیں، اسے مخالفین ایک "ڈراؤنے خواب” سے تعبیر کر رہے ہیں۔

پیر 20 رجب 1438 ہجری­ 17 اپریل 2017ء  شمارہ: (14020)
شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>