ایرانی پروفیسرز کی پٹیشن میں بنیادی تبدیلیوں کا مطالبہ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
کو: جمعرات, 27 اپریل, 2017
0

ایرانی پروفیسرز کی پٹیشن میں بنیادی تبدیلیوں کا مطالبہ

ایک سو یونیورسٹی پروفیسرز کا خامنہ ای سے "معاشرے کے نظام میں اعتماد کی بحالی” کا مطالبہ
1493222543844215800

جہانگیری کل انتخابی مہم کے دوران ریڈیو پر ایک پروگرام ریکارڈ کرواتے ہوئے (ايلنا)

 

لندن: عادل السالمی

      کل ایران کی تقریبا 40 یونیورسٹیوں کے سو سے زائد پروفیسرز نے سپریم لیڈر علی خامنہ ای کے نام کھلے پیغام میں ریاستی اداروں میں بنیادی تبدیلیاں لانے پر زور دیا۔ ان کا یہ مطالبہ خامنہ ای کے خطاب کے چند دن بعد ہے جس میں انہوں نے آنے والی حکومت سے بھرپور انداز میں مطالبہ کیا کہ وہ موجودہ بحرانوں پر خاص توجہ دے جن میں سرفہرست حالات زندگی اور معیشت ہے۔

      پروفیسر حضرات نے اپنی پٹیشن میں ایرانی سپریم لیڈر سے نہ صرف حکومت میں مکمل تبدیلیوں کا مطالبہ کیا بلکہ اس سے براہ راست متاثر ہونے والے اس کے ماتحت تمام کمیٹیاں اور ادارے بھی اس میں شامل ہیں، جیسے وزارت خارجہ اور عدلیہ، سیکورٹی ادارے، "خاتم الانبیاء” گروپ، "پاسداران انقلاب” کا معاشی ونگ اور آئندہ ماہ ہونے والے صدراتی انتخابات کے امیدوار ابراہیم رئیسی کی سربراہی میں چلنے والا منافع بخش گروپ "آستان قدس رضوی” اس میں شامل ہیں۔

جمعرات 30 رجب 1438 ہجری ­ 27 اپریل 2017ء  شمارہ: (14030)

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>