شام میں "پرامن علاقوں" کے قیام کی اجازت اور اتحادی طیاروں کی پرواز پر پابندی - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
کو: ہفتہ, 6 مئی, 2017
0

شام میں "پرامن علاقوں” کے قیام کی اجازت اور اتحادی طیاروں کی پرواز پر پابندی

1494003758862710100

شامی شہر الرقہ سے بے گھر ہونے والے افراد اپنا سامان اٹھائے عین عیسی قصبے کے ایک کیمپ کی جانب جاتے ہوئے (رویٹرز)

 

بيروت: كارولين عاكوم – ماسكو: طہ عبد الواحد

      گذشتہ نصف شب کو شام میں "پرامن علاقوں” کے بارے میں آستانہ معاہدے کے تنفیذ کا آغاز کر دیا گیا ہے، جیسا کہ روس نے اعلان کیا تھا کہ پرامن زون میں اضافہ کرتے ہوئے ان علاقوں کو ریاست ہائے متحدہ امریکہ کی قیادت میں اتحادی طیاروں کے لئے بند کر دیا جائے گا، لیکن تنظیم داعش اور نصرت فرنٹ کے خلاف جنگ جاری رکھی جائے گی۔

      دریں اثناء امریکی وزارت خارجہ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ وہ "ہر اس کوشش” کی حمایت کریں گے جو شام میں حقیقی معنوں میں  قیام امن کے لئے ہو۔ علاوہ ازیں امریکی وزارت نے نئے اتفاق پر اپنے شکوک و شبہات کا بھی اظہار کیا ہے۔ دوسری جانب شام سے متعلق آستانہ مذاکرات میں روس کے نمائندے الیگزینڈر لاورینٹیف نے کہا ہے کہ ماسکو شام کے بارے میں ریاست ہائے متحدہ امریکہ اور سعودی عرب کے ساتھ مل کر کام کرنے کو تیار ہے۔

      دریں اثناء روس کے نائب وزیر دفاع الیگزینڈر فومین نے کہا ہے کہ امریکہ کے حالیہ موقف سے شام میں سیاسی حل کے لئے ماحول سازگار ہوا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اقوام متحدہ، ریاست ہائے متحدہ امریکہ اور سعودی عرب کی حمایت حاصل کرنے کے لئے معاہدے کے نفاذ کو یقینی بناتا ضروری ہے۔

ہفتہ 10 شعبان 1438 ہجری­ 06 مئی 2017ء  شمارہ: (14039)
شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>