موصل میں "داعش" کے لئے خود کشی آخری آپشن - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: بدھ, 10 مئی, 2017
0

موصل میں "داعش” کے لئے خود کشی آخری آپشن

news-090517-2

کل موصل کے شمال مغربی علاقے ھرمات میں مسلح "داعش” کے ساتھ جھڑپوں کے دوران ایک عراقی فوجی دیوار کے پیچھے پناہ لئے ہوئے (ا.ف.ب)

موصل: دلشاد عبد الله

      جبکہ عراقی فورسز مغربی موصل میں "داعش” پر اپنا گھیرا تنگ کر رہی ہے اور چند روز قبل شہر کے مغربی جانب شمالی محور میں ان کے خلاف ایک نیا محاذ کھول دیا ہے، تو ایسی صورت میں سیکورٹی فورسز کی پیش رفت کو روکنے سے مایوس ہونے کے بعد شدت پسند تنظیم (داعش) کے پاس آخری آپشن خود کشی کی بچی ہے۔

      وفاقی پولیس کے کمانڈر رائد شاکر جودت نے "الشرق الاوسط” سے کہا کہ "ہماری فورسز نے ھرمات کے علاقے میں موجود تمام رہائشی مکانوں پر مکمل کنٹرول حاصل کر لیا ہے، جبکہ فوری رد عمل کے دوران ھرمات دوم کے علاقے کو مختلف حصوں میں تقسیم کر دیا گیا ہے”۔ انہوں نے مزید کہا کہ "دہشت گردوں کا دفاع ٹوٹ چکا ہے اور انہوں نے بھاگنا شروع کر دیا ہے اور ہمارا ہدف ہے کہ ان بھاگنے والوں کا (ڈرون) طیاروں کے ذریعے پیچھا کیا جائے اور ان کی گاڑیوں کو نشانہ بنایا جائے”۔

بدھ 13 شعبان 1438 ہجری ­ 10 مئی 2017ء شمارہ: (14043)
الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>