شام میں "ایرانی اجارہ داری" کو ختم کرنے کے لئے امریکی اقدام - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: پیر, 29 مئی, 2017
0

شام میں "ایرانی اجارہ داری” کو ختم کرنے کے لئے امریکی اقدام

شام کے جنوب میں "محفوظ علاقے” کے بارے میں واشنگٹن کا ماسکو کے ساتھ مذاکرات

 

لندن: ابراہیم حميدی

       امریکی اور روسی حکام جنوبی شام میں "پرامن علاقے” کے بار میں فوجی اور سفارتی مذاکرات کے چند روز بعد عمان میں دوبارہ مذکرات شروع کر رہے ہیں۔ دریں اثنا واشنگٹن عراقی سرحد کے قریب تنف میں "آزاد فوج” کی حمایت جاری رکھتے ہوئے الرقہ کو "داعش” سے آزاد کرانے کے لئے "شامی ڈیموکریٹک فورسز” کی امداد کر رہا ہے اور یہ سب امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی حکومت کی طرف سے شام میں "ایرانی اجارہ داری” کو ختم کرنے کے اقدام کا ایک حصہ ہے۔

       مغربی ذمہ دار نے "الشرق الاوسط” کو بتایا کہ چند روز پہلے امریکہ نے دمشق کی حمایت یافتہ ایرانی ملیشیا کو تنف نامی فوجی چھاؤنی کی طرف پیش قدمی سے منع کرنے کے لئے ان پر بمباری کی۔ تنف نامی فوجی چھاؤنی میں امریکی، برطانوی اور ناروے کے تربیت یافتہ اور شامی مخالف جماعتوں کے جنگجو قیام پذیر ہیں۔ یاد رہے کہ ہی پہلی بار ہے کہ امریکی فوج شامی مخالف جماعتوں کے زیر کنٹرول کسی علاقے کا دفاع کر رہی ہے۔

 

پیر 3 رمضان المبارک 1438 ہجری­ 29 مئی 2017ء  شمارہ: (14062)
الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>