بحران کے حل میں رکاوٹ ڈالنے کے لئے دوحہ کی طرف سے "خودمختاری" کا بہانا - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
به قلم:
کو: اتوار, 25 جون, 2017
0

بحران کے حل میں رکاوٹ ڈالنے کے لئے دوحہ کی طرف سے "خودمختاری” کا بہانا

 

واشنگٹن: ہبہ قدسی،    لندن – دبئی: "الشرق الاوسط”

      کل دوحہ نے سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، بحرین اور مصر کے ساتھ اپنے بحران کے حل کی کوششوں میں رکاوٹ ڈالنے کے لئے "خودمختاری” کا بہانا کیا ہے اور یہ بحران کے حل تک رسائی کی کوششوں میں ریاست ہائے متحدہ امریکہ کی مداخلت کرنے کے بعد ہے۔

      دوحہ پر عائد پابندیاں اٹھانے کے لئے چاروں ممالک کی جانب سے اسے 13 مطالبات دیئے گئے ہیں، جن پر عمل درآمد کے لئے 10 دن کی مہلت دی گئی ہے۔ چنانچہ اس کے جواب میں کل قطر کے حکومتی رابطہ دفتر کے ڈائریکٹر شیخ سیف بن احمد نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ "یہ مطالبات قطر کی خودمختاری کو محدود کرنے کے مترادف ہیں”۔ قطر کی وزارت خارجہ کے مطابق؛ جو کہ ان مطالبات کا جائزہ لے رہی ہے، ان مطالبات کی فہرست کا سرکاری طور پر اعلان نہیں کیا گیا، لیکن یہ مطالبات لیک ہونے کے بعد بڑے پیمانے پر سوشل نیٹ ورک پر پھیل گئے، جسے متحدہ عرب امارات کے خارجہ امور کے وزیر انور قرقاش نے کویت کی ثالثی کے نقصان سے تعبیر کیا اور اس طرح "یہ بحران واپس اپنے خانے میں لوٹ آیا ہے”۔

اتوار 1 شوال 1438 هـ ­ 25 جون 2017ء  شمارہ: (14089)
شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>