عراق کا داعش کی ریاست کے خاتمے کا اعلان - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعہ, 30 جون, 2017
0

عراق کا داعش کی ریاست کے خاتمے کا اعلان

سرکاری افواج کا جامع مسجد نوری پر دوبارہ قبضہ – اور چھپے ہوئے عناصر پر سختی

کل حکومتی افواج کا پرانے موصل شہر پر دوبارہ کنٹرول حاصل کرنے کے بعد تباہ شدہ جامع مسجد نوری کا منظر (ا.ف.ب)

 

اربيل: "الشرق الاوسط”

      کل عراقی حکام نے اعلان کیا ہے کہ حکومتی افواج نے جامع مسجد نوری پر کنٹرول حاصل کر لیا ہے؛ یہ وہی مسجد ہے جہاں پر تین سال قبل تنظیم داعش کے رہنما  ابو بکر البغدادی نے اپنی مبینہ "خلافت” کا اعلان کیا تھا، جس کے بعد شہر میں تنظیم کی مہم شروع ہو گئی اور یہ شہر عراق میں اس تنظیم کا "دارالحکومت” شمار کیا جانے لگا۔

      ایک ہفتے کی مسلسل جھڑپوں کے بعد عراق کی انسداد دہشت گرد فورسز جامع مسجد نوری پر کنٹرول حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئی ہے، جبکہ ماہ رواں جون کی 21 تاریخ کو "داعش” نے اس مسجد کے تاریخی مینار حدبا اور مسجد کو تباہ کر دیا تھا۔ چنانچہ جامع مسجد نوری پر عراقی افواج کا کنٹرول موصل کاروائی میں فتح کی علامت ہے، کیونکہ یہ علاقہ موصل کے اکثر شہریوں کے نزدیک ایک اہم مقام کی حیثیت رکھتا ہے۔ یاد رہے کہ حدبا کا تاریخی مینار اس شہر کی شناخت تھا، جس کی تصویر دس ہزار عراقی دینار کے کرنسی نوٹ پر بھی چھپی ہوئی ہے۔

جمعہ 5 شوال 1438 ہجری­ 30 جون 2017ء  شمارہ: (14094)
الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>