مغربی ممالک نے الرقۃ کے اندر داعش کے اہلکار کو اپنے قبضہ میں لے لیا - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعرات, 19 اکتوبر, 2017
0

مغربی ممالک نے الرقۃ کے اندر داعش کے اہلکار کو اپنے قبضہ میں لے لیا

دیر الزور میں حکومت کے جنرل عصام زہر الدین کی ہلاکت اور "حقل عمر”  نامی تیل کے میدان پر کنٹرول کرنے کے لئے حملے

کل شام کی ڈیموکریٹک فورسز ایک فرد الرقۃ کے "دوار النعيم” کے علاقہ کی طرف دیکھتا ہوا (اے ایف پی)

الرقۃ: کمال شیخو

       کل ایک طرف عرب اور کرد پر مشتمل شام کی ڈیموکریٹک فورسز کے میڈیا دفتر نے الرقہ شہر کو سنوارنے اور داعش کے مخفی ٹکڑیوں کو تلاش کرنے کا اعلان کیا ہے تو دوسری طرف ذرائع نے یہ بھی بیان کیا ہے کہ مغربی ممالک نے الرقہ کے اندر داعش کے غیر ملکی اہلکار کو اپنے قبضہ میں تفتیش کرنے کے لئے لے لیا ہے۔(۔۔۔)

       اسی سلسلہ کی ایک خبر یہ ہے کہ دیر الزور کے اندر ریپبلیکن گارڈ میں بریگیڈیئر جنرل عصام زہر الدین دیر الزور شہر کے ایک علاقہ میں ایک بارودی سرنگ پھٹنے کی وجہ سے ہلاک ہو گئے ہیں۔

       دوسری طرف شامی فورسز نے دیر الزور کے مشرق میں واقع حقل عمر نامی تیل کے علاقہ پر قبضہ کرنے کے لئے حملہ کیا ہے جبکہ شام کی ڈیموکریٹک فورسز شام کی مشرقی علاقہ میں تیل اور گیس کے میدانوں پر قبضہ کرنے کے لئے اقدام کر رہی ہے۔(۔۔۔)

جمعرات – 29 محرم 1439 ہجری – 19 اكتوبر 2017ء شمارہ نمبر: (14205)

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>