مشرقی دیر الزور سے "داعش" کے انخلاء کے لئے ثالثی - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
کو: پیر, 23 اکتوبر, 2017
0

مشرقی دیر الزور سے "داعش” کے انخلاء کے لئے ثالثی

ترکی کا شمالی شام میں 8 چھاؤنیاں قائم کرنے کا منصوبہ

گذشتہ جمعہ کے روز دیر الزور سے بے گھر ایک بچہ رقہ کے قریب عین عیسی کیمپ میں (ا.ف.ب)

 

بيروت: نذير رضا – انقرہ: سعيد عبد الرازق

      کل "شامی ڈیموکریٹک فورسز” نے شام  کے گورنریٹ دیر الزور سے "داعش” کے انخلا کے بعد علاقے کے سب سے بڑے تیل کے کنویں العمر پر کنٹرول کر لیا ہے۔ دریں اثنا تنظیم کے ساتھ قبائلی مفاہمت کی بھی معلومات ملی ہیں تاکہ دریائے فران کے مشرقی کنارے کے علاقے کو "شامی ڈیموکریٹک فورسز” کے قبضہ میں دے دیا جائے۔ جبکہ شام میں انسانی حقوق کی رصد گاہ نے بتایا ہے کہ یہ مفاہمت "ہمہ جہت اتفاق” پر مبنی تھی جس کے مطابق "داعش” دیر الزور کے مشرقی دیہات سے مکمل طور پر انخلا کرے گی۔ شامی قبائل کے ایک اہم ذریعہ نے "الشرق الاوسط” کو بتایا کہ "یہ معاہدہ العمر نامی تیل کے کنویں اور اسکے ارد گرد کے دیہات کو شامی ڈیموکریٹک فورس کو دینے اور اس کے بدلہ میں "داعش” کے عناصر کو رقہ سے مشرقی دیر الزور کی جانب پرامن راہ فراہم کی جائے گی”۔ انہوں نے مزید کہا کہ "ابھی تک واضح معلومات نہیں ہیں کہ یہ معاہدہ ہمہ جہت تھا یا نہیں”۔

پیر – 3 صفر 1439 ہجری – 23 اكتوبر 2017ء شمارہ: [14209]
شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>