یمن کی جنگ کب ختم ہوگی؟ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
مشاری الذایدی
کو: اتوار, 29 اکتوبر, 2017
0

یمن کی جنگ کب ختم ہوگی؟

مشاری الذایدی

 

           یمن کو 2015 کے وسط سے حفاظت کے نام پر خمینی کے علاقائی ایجنٹ حوثیوں کے ہاتھوں جنگ کے تیز طوفان کی زد میں ہے، جبکہ ایک ہی سوال بار بار دہرایا جاتا ہے کہ کبھی اچھی نیت تو کبھی بری نیت، لیکن یہ جنگ کب ختم ہوگی؟

           کیا سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کو اس مہنگی ترین جنگ کا خمیازہ سیاسی، ذرائع ابلاغ، معاشی اور افرادی اعتبار سے اٹھانا پڑے گا؟

            جنگ میں بڑھاؤ کے ساتھ اس کے درد میں اضافہ ہو رہا ہے، تو کیا اس تاریکی سے روشنی بھی پھوٹے گی؟

            اس سوال میں کوئی حرج نہیں، یہ نارمل سا سوال ہے اور ویسے بھی کون ہے جو جنگ پسند کرتا ہے؟ جیسا کہ ارشاد باری تعالی ہے "كتب عليكم القتال وهو كره لكم وعسى أن تكرهوا شيئا وهو خير لكم”۔

               کل بروز جمعرات سعودی عرب کے ولی عہد، وزیر دفاع شہزادہ محمد بن سلمان نے (رویٹرز) نیوز ایجنسی سے ملاقات کی اور وضاحت کی کہ یمن میں جنگ جاری ہے تاکہ "حوثیوں کو ہماری سرحد پر ایک اور "حزب اللہ” کو بنا دیا جائے”۔ انہوں نے زور دیتے ہوئے کہا: "ہم جنگ جاری رکھیں گے جب تک کہ یہ یقین نہیں ہوتا کہ اب "حزب اللہ” نہیں ہے کیونکہ یہ لبنان سے زیادہ خطرناک ہے”۔ (۔۔۔۔۔۔)

            اسی طرح ایک اور جنگ کی قسم مقابلہ نہ کرنے کی جنگ ہے، یعنی عہدیدار یا رہنما اپنی ذمہ داریوں سے صرف نظر کرے۔ جبکہ کچھ ممالک ایسے ہیں جو مضبوط قوت ارادہ رکھتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ جنگیں ملکوں میں معاشرے کی ترقی کو متاثر کرتی ہے۔

             مراد یہ ہے کہ آپ ایک طرف لڑ سکتے ہیں اور دوسری جانب تعمیری کام کر سکتے ہیں۔ سعودی عرب ان دنوں مستقبل کے لئے دوطرفہ سرمایہ کاری کا بہت زیادہ خواہشمند ہے، جیسا کہ ہم نے "نیوم” منصوبے میں دیکھا ہے۔ (۔۔۔)

          ایک اور بات، ہم سعودی عرب کے بڑے بڑے منصوبوں کے بارے میں بات کر رہے ہیں اور مصر اس میں بحر احمر کے ساتھ واقع ہے۔ چنانچہ بحر احمر کے علاقے میں یمنی حوثیوں کو شکست دے کر یمنی ساحلوں سے انہیں بے دخل کیا جائے۔

       شہزادہ محمد بن سلمان نے گذشتہ بیانات کے دوران یمنی علاقوں اور باب المندب کے علاقے کا دورہ کیا اور انہوں نے کہا کہ اگر یہاں کوئی واقعہ پیش آتا ہے تو عالمی تجارت کا 10 فیصد رک جائے گا”۔

قول ہے: جنگ اور ترقی ایک ہی وقت میں کئے جا سکتے ہیں۔

 

جمعہ – 7 صفر 1439 هـ – 27 اكتوبر 2017ء شمارہ: [14213]
مشاری الذایدی

مشاری الذایدی

مشاری الذیدی (مولود 1970) کا شمار ایک ماہر صحافی، سیاسی تجزیہ نگار اور مضمون نگار کی حیثیت سے ہے، سعودیہ عربیہ کے رہنے والے ہیں اور فی الحال کویت میں مقیم ہیں، متوسط درجے کی کارکردگی اور مذہبی جذبات کے ساتھ ان کی فراغت سنہ1408 هـ میں ہوئی، وہ اسلامی سرگرمیوں، موسم گرما کے مراکز اور لائبریریوں میں پیش پیش رہے ہیں اور اسی کے ساتھ ساتھ مقامی عرب پریس، دیگر پروگرام اور اسلامی انتہاپسندی کے موجودہ مسائل پر ایک ماہر صحافی اور قلمکار کی حیثیت سے حصہ لیا ہے ۔

More Posts

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>

Time limit is exhausted. Please reload CAPTCHA.