سعودی عرب کے اسٹیڈیم میں عورتوں کے داخلہ کے ساتھ نئی دنیا کا استقبال - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
مشاری الذایدی
کو: بدھ, 1 نومبر, 2017
0

سعودی عرب کے اسٹیڈیم میں عورتوں کے داخلہ کے ساتھ نئی دنیا کا استقبال

مشاری الذایدی

        سعودی عرب کے فٹبال اسٹیڈیم میں عورتوں کے داخل ہونے کے سلسلہ میں کھیل اتھارٹی کی طرف سے کئے جانے والے فیصلہ کا شمار حالیہ سعودی حکومت کے قابل ستائش اور جرات مندانہ اہم اقدامات میں سے ہے۔

        اس فیصلہ سے قبل بہت بڑی تبدیلی کا مشاہدہ کیا گیا ہے جس کی آواز بازگاشت پوری دنیا میں تھی اور اس میں کوئی مبالغہ آرائی نہیں ہے اور یہ معاملہ عورتوں کے گاڑی چلانے کا تھا۔

         جیسا کہ یہ بات فطری ہے کہ بعض لوگ کبھی دینی دلیل یا کبھی سماجی وثقافتی دلیل یا کبھی دونوں دلیل کے ذریعہ ان تبدیلیوں کا مقابلہ کرتے ہیں لیکن اس انکار میں وہ سختی نہیں ہے جیسا کہ اس سے قبل تھی کیونکہ ہم حقیقی طور پر بدل رہے ہیں اور یہی عافیت وصحت کی دلیل ہے اور جس کے اندر تبدیلی نہیں ہوتی ہے اور نہ اس کے اندر کسی قسم کا بدلاؤ ہوتا ہے تو اس پر زوال اور جمود کا حکم لگایا جاتا ہے۔(۔۔۔)

        نئی چیز کا مقابلہ کرنا اگرچہ اس کا تعلق دین کے کسی ایسے حکم سے نہ ہو  جس کی دلالت صریح اور اس کا ثبوت قطعی ہو لیکن پھر بھی اس کے لئے تکلف کے ذریعہ فقہی سند تلاش کر لیا جاتا ہے تاکہ وہ سماجی اور نفسیاتی انکار کا پردہ ثابت ہو۔

        یہ طریقہ کار بہت سے ملکوں، ادیان اور جماعتوں میں پایا گیا ہے اور اسی سے متعلق معاملہ میں عراق کے سماجی مفکر اور عالم درس نظامی کے مدارس کھولنے کے سلسلہ میں شیعہ علمائے دین کے مقابلہ کا ذکر کرتے ہیں۔(۔۔۔)

        نئی چیز کا انکار کرنا ایک عام رویہ ہے جو زمانہ کے گزرنے اور دل کی کیفیات کے بدلنے سے ختم سا ہو جاتا ہے لیکن اگر کوئی شخص اس انکار کے ذریعہ کوئی بڑا مسئلہ پیدا کردے تو یہ دوسری بات ہے۔

نئی دنیا میں سعودی عرب کی خواتین کا استقبال ہے۔

 بدھ – 12 صفر 1439 ہجری – 291 نومبر 2017ء شمارہ نمبر: (14218)

مشاری الذایدی

مشاری الذایدی

مشاری الذیدی (مولود 1970) کا شمار ایک ماہر صحافی، سیاسی تجزیہ نگار اور مضمون نگار کی حیثیت سے ہے، سعودیہ عربیہ کے رہنے والے ہیں اور فی الحال کویت میں مقیم ہیں، متوسط درجے کی کارکردگی اور مذہبی جذبات کے ساتھ ان کی فراغت سنہ1408 هـ میں ہوئی، وہ اسلامی سرگرمیوں، موسم گرما کے مراکز اور لائبریریوں میں پیش پیش رہے ہیں اور اسی کے ساتھ ساتھ مقامی عرب پریس، دیگر پروگرام اور اسلامی انتہاپسندی کے موجودہ مسائل پر ایک ماہر صحافی اور قلمکار کی حیثیت سے حصہ لیا ہے ۔

More Posts

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>