روحانی کی طرف سے ریاض کے خلاف دشمنی اور جارحیت کے سلسلہ میں جواز نامہ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعرات, 9 نومبر, 2017
0

روحانی کی طرف سے ریاض کے خلاف دشمنی اور جارحیت کے سلسلہ میں جواز نامہ

امریکہ نے یمن میں اقوام متحدہ کی طرف سے پیش کردہ حل میں رکاوٹ پیدا کرنے کا الزام ایران اور حوثیوں پر لگایا ہے

ایرانی صدر حسن روحانی

ریاض: عبد الہادی حبتور

        کل ایرانی صدر حسن روحانی نے یمن سے سعودی عرب کی طرف حوثیوں کے ذریعہ چھوڑے جانے والے میزائل کے سلسلہ میں جواز پیش کیا ہے اور اسی طرح گزشتہ ہفتہ کے دن چھوڑے جانے والے اس میزائل کے سلسلہ میں بھی جواز پیش کیا  جسے سعودی عرب کی دفاعی انتظام نے ناکام بنا دیا تھا۔

       روحانی نے تہران کے اندر ایک سرکاری اجلاس کے دوران کہا کہ یمن میں عرب اتحاد کا مقابلہ کرنے کے لئے حوثیوں کے سامنے ہتھیار اٹھانے کے علاوہ کوئی چارہ کار نہیں ہے اور اسی طرح انہوں نے اپنے ملک کی طرف سے علاقائی مداخلت کا بھی جواز پیش کیا ہے اور یہ ظاہر کیا ہے کہ ان کا ملک عراق، شام اور یمن میں ترقی کے علاوہ کچھ بھی نہیں چاہتا ہے۔

       اسی سلسلہ میں کل وائٹ ہاؤس سے صادر ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ایران اور اس کے حوثی اتحادی نے ہی یمن کے مسئلہ میں اقوام متحدہ کی طرف سے پیش کردہ حل کے درمیان رکاوٹ پیدا کیا تھا اور اس بیان میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ سعودی عرب کے خلاف حوثیوں کی طرف سے مارے جانے والے میزائل علاقائی امن وسلامتی کے لئے خطرہ ہیں۔(۔۔۔)

جمعرات – 20 صفر 1439 ہجری – 09 نومبر 2017ء  شمارہ: (14226)

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>