ٹرمپ اور پوتین کا شام کے حل کے اصولوں پر اتفاق - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: اتوار, 12 نومبر, 2017
0

ٹرمپ اور پوتین کا شام کے حل کے اصولوں پر اتفاق

"داعش” البوکمال میں دم توڑتا ہوا اور ایران کا دمشق کے جنوب میں ہمیشہ کے لئے فوجی اڈہ بنانے کا فیصلہ

پوٹن اور ٹرمپ کو ویتنام میں منعقدہ ایشیا پیسفک سربراہی اجلاس میں شرکت کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (رائٹرز)

ماسکو – لندن: "الشرق الاوسط”

        واشنگٹن اور ماسکو نے امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ اور روسی صدر فلادیمئر پوٹن کے درمیان ویتنام میں منعقدہ ایشیاء پیسفک سربراہی اجلاس کے موقعہ پر جلد ملاقات کے بعد شامی بحران کی بنیادی حل کے سلسلہ میں ان دونوں کے اتفاق کا اعلان کیا ہے۔

        کرملین نے اپنے الیکٹرانک ویب سائٹ پر لکھا ہے کہ دونوں صدر نے شام کے تنازعہ پر اتفاق کیا ہے کہ اس کا کوئی فوجی حل نہیں ہے اور ان دونوں نے تنظیم داعش کی ہلاکت کے سلسلہ میں اپنے لائحہ عمل پر زور دیا ہے۔(۔۔۔)

        اسی سلسلہ میں کل شام حقوق انسان کی شامی رصدگاہ نے بتایا ہے کہ داعش نے عراق اور شام کی سرحد پر واقع البوکمال شہر پر دوبارہ قبضہ کر لیا ہے اور وہ اپنے آخری قلعہ کی حفاظت میں جان کی بازی لگا دیگا۔

        دوسری طرف بی بی سی نے ایک رپورٹ نشر کیا ہے جس میں اس بات کی تاکید ہے کہ ایران دمشق کے جنوب میں واقع الکسوہ کے اندر میلیشیاؤں کا تعاون کرنے کے لئے ایک فوجی اڈہ بنانے جا رہا ہے اور تہران کی طرف سے مدد کردہ یہ میلیشیائیں شامی حکومت کی فورسز کے ساتھ مل کر جنگ کریں گی۔

اتوار – 23 صفر 1439 ہجری – 12 نومبر 2017ء  شمارہ: (14229)

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>