العبادی کی اربیل کی جانب پہل کاری اور تنازعہ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: منگل, 26 دسمبر, 2017
0

العبادی کی اربیل کی جانب پہل کاری اور تنازعہ

فائل فوٹو جس میں عراقی وزیر اعظم حیدر العبادی اور صوبہ کردستان کے وزیر اعظم نیجیروان بارزانی جمع ہیں (رووڈاو)

 

بغداد – اربیل: "الشرق الاوسط”

      عراقی وفاقی حکومت کے وزیر دفاع و وزیر داخلہ، وزیر اعظم حیدر العبادی کی سربراہی میں صوبہ کردستان کے ہونے والے دورہ کے بارے میں معلومات نے کل تنازعہ کھڑا کھر دیا ہے۔

      نیوز ایجنسی "رووڈاو” نے اپنے ذرائع سے نقل کیا ہے کہ "صوبہ کردستان میں کئی پہل کاریوں کی تجویز، بات چیت کے لئے تیار ہونے کے اعلان اور بغداد پر بین الاقوامی دباؤ کے باعث وزیر داخلہ قاسم الاعرجی اور وزیر دفاع عرفان الحیالی اربیل میں ایئر پورٹ اور سرحدی راہداریوں کے مسٔلہ کا جائزہ لینے کے لئے وہاں کا دورہ کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں”۔ (۔۔۔)

      لیکن ایک ذمہ دار عراقی ذریعہ نے نام ظاہر نہ کرتے ہوئے "الشرق الاوسط” کو انکار کیا ہے کہ العبادی اور دو وزیر صوبے کا دورہ کرنے والے ہیں۔ ذریعہ نے کہا "اس بارے میں معلومات نہیں ہیں”، اور ابہام کو دور کرتے ہوئے کہا کہ "العبادی طرفین میں بات چیت ہونے کی صورت میں مذکورہ دونوں وزیروں کو کردستان میں بھیجیں گے، اور اس کے دیگر معروف قوانین ہیں”۔

 

منگل – 8 ربيع الثاني 1439 ہجری – 26 دسمبر 2017ء  شمارہ: [14273]
الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>