ایران میں مظاہرے پسماندہ شہروں تک پھیل گئے - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: پیر, 1 جنوری, 2018
0

ایران میں مظاہرے پسماندہ شہروں تک پھیل گئے

گرفتاری مہم اور انٹرنیٹ پر پابندی، اور تہران میں سرکاری دفاتر نذر آتش

فارس نیوز ایجنسی کی جانب سے شائع کردہ تصویر جس میں کل رات دارالحکومت تہران کے وسط میں فردوسی اسکوائر میں فسادات سے نمٹنے والی فورس مظاہرین کو منتشر کرنے کی کوشش کر رہی ہے

لندن: عادل السالمی

      کل ایران میں ایک گرم رات کے بعد؛ جس میں مظاہرین نے دارالحکومت تہران سمیت ایران کے بڑے شہروں میں حکومتی دفاتر اور بینکوں کو جلا دیا، یہ احتجاج ملک کے پسماندہ و غریب شہروں تک پھیل گئے ہیں۔ (۔۔۔)

      رپورٹ کے مطابق دارالحکومت سے تقریبا دو سو اور آراک سے سو مظاہرین کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ جبکہ حکومتی ذریعہ کے مطابق قومی سیکورٹی کونسل نے تصدیق کی ہے کہ اس نے مظاہرین کا آپس میں انٹرنیٹ پر رابطے کو منقطع کرنے کی کوشش میں "ٹیلیگرام اور انسٹاگرام کو عارضی طور پر بلاک کر دیا ہے”۔ (۔۔۔)

      صدر حسن روحانی کی خاموشی پر بہت زیادہ تنقید کے بعد، کل سرکاری ذرائع ابلاغ نے پرسوں (بروز ہفتہ) منعقدہ ایک ہنگامی اجلاس میں ہونے والے بیانات کو شائع کیا ہے، جس میں مظاہرین سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ "وہ تشدد پسندی سے اور عوامی املاک کو نقصان پہنچانے سے دور رہیں”۔ دریں اثناء سیکورٹی اداروں کو "ضبط نفس” سے کام لینے کا مطالبہ کیا ہے اور اس کےساتھ ساتھ اقتصادی مسائل کو تسلیم کیا ہے۔

 

پیر – 14 ربيع الثاني 1439 ہجری – 01 جنوری 2018ء شمارہ: [14279]
الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>