حوثیوں کو ہتھیار دینے میں ایران کے ملوث ہونے کے سلسلہ میں بین الاقوامی تصدیق - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: ہفتہ, 13 جنوری, 2018
0

حوثیوں کو ہتھیار دینے میں ایران کے ملوث ہونے کے سلسلہ میں بین الاقوامی تصدیق

79 صفحات پر مشتمل ایک رپورٹ میں میزائل کی ترقی کے سلسلہ میں میلیشیاؤں کی نااہلی کا بیان

صنعاء میں اتحاد کے جہازوں کے ذریعہ نشانہ بنانے کے بعد باغیوں کے فوجی پوائنٹ سے اٹھتا ہوا دھواں

نیویارک: علي بردى

          سلامتی کونسل کے قرادادوں کی وجہ سے یمن پر پابندیوں کی کمیٹی کے ماہرین کے رپورٹ نے نئے دلائل کا انکشاف کیا ہے جن سے معلوم ہوتا ہے کہ ایران اسلحہ، ساز وسامان اور سعودی عرب کو نشانہ بنانے کے مقصد سے استعمال کرنے کے لیے بیلسٹک میزائل کے ذریعہ حوثیوں کی مدد کرنے میں ملوث ہے اور اس کے ذریعہ اس نے 2216 قرارداد کو پامال بھی کیا ہے۔

         یہ خفیہ رپورٹ جس کی بعض معلومات "الشرق الاوسط” نے حاصل کی ہے اور امید ہے کہ سلامتی کونسل کے اراکین اسے 27 تاریخ کو حاصل کر لیں گے وہ رپورٹ 79 صفحات پر مشتمل ہے اور اس کے علاوہ اس میں 331 ضمیمے بھی ہیں اور اس رپورٹ صدر ڈونالڈ ٹرمپ اور ان کی انتظامیہ کی طرف سے ایران پر لگائے جانے والے ان الزامات کو سچ ثابت کر دیا ہے کہ اس نے حوثیوں کی مدد مختلف قسم کے ہتھیاروں سے کیا ہے اور ان میں بیلسٹک میزائل بھی ہے اور ماہرین کی کمیٹی نے اپنے رپورٹ میں بتایا ہے کہ ایران میں بنے ہوئے یا وہاں سے برآمد کئے ہوئے ہتھیاروں کے پارٹس حوثیوں نے حاصل کیا ہے اور اس سلسلہ میں قوی اشارے بھی ملے ہیں لیکن اس بات کا بھی ذکر ہے کہ میلیشیاؤں کے افراد ان ہتھیاروں کو بذات خود ترقی نہیں دے سکتے ہیں۔(۔۔۔)

ہفتہ – 25 ربيع الثاني 1440 ہجری – 13 جنوری 2018ء  شمارہ نمبر: (14291)

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>