زیتون کی جنگ اور داخل ہونے سے پہلے ترکی حملے - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: اتوار, 21 جنوری, 2018
0

زیتون کی جنگ اور داخل ہونے سے پہلے ترکی حملے

دمشق کا عفرین آپریشن کی خبر ملنے کی نفی، امریکی اور روسی مذاکرات اور انتظامیہ ابو الضہور ہوائی اڈہ پر قبضہ

کل عفرین کے قریب ترکی کی طرف سے حمایت کردہ آزاد فوج اور کرد تحفظ یونٹس کے درمیان جھڑپیں (اے ایف پی)

انقرة: سعيد عبد الرازق – ماسكو: طہ عبد الواحد

         کل ترکی نے شمالی شام کے عفرین علاقہ میں زبردست فضائی حملہ اور توپ کے گولا بارود کے ذریعہ زیتون کی ٹہنی نامی کاروائی کا آغاز کر دیا ہے اور ترکی وزیر اعظم ابن علی یلدرم نے کہا کہ یہ زمینی طور پر داخل ہونے کی تمہید ہے جبکہ ترکی کی طرف سے مدد کردہ شام کی آزاد فورسز نے شہر کی طرف پیش قدمی کی ہے۔

        اسی سلسلہ میں ایک کردی رہنماء نے "الشرق الاوسط” کو بتایا ہے کہ ماسکو نے ترکی کو جہاز استعمال کرنے کی اجازت دے دی ہے اور ادلب کے ابو الضہور نامی اس ہوائی اڈہ سے شامی مخالف جماعتوں نے واپسی اختیار کر لی ہے جس پر شامی حکومت کا قبضہ تھا۔(۔۔۔)

        روس نے اس کاروائی کے سلسلہ میں اپنے افسوس کا اظہار کیا ہے اور روس کے وزیر خارجہ اور امریکی وزیر خارجہ کے درمیان ہونے والی گفتگو میں صبر کرنے کی دعوت دی ہے۔(۔۔۔) جبکہ جاویش اوگلو نے اعلان کیا ہے کہ دمشق کو تحریری طور پر اس کاروائی کی اطاع دے دی گئی ہے اور شامی انتظامیہ نے اس کی نفی کی ہے اور اس ترکی حرکت کو ظلم زیادتی سے تعبیر کیا ہے۔

اتوار – 23 جمادی الاول 1440 ہجری – 21 جنوری 2018ء  شمارہ نمبر: (14299)

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>

Time limit is exhausted. Please reload CAPTCHA.