ترکی بشمول عفرین "محفوظ بلیٹ" مسلط کرنے کے لئے کوشاں - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: پیر, 22 جنوری, 2018
0

ترکی بشمول عفرین "محفوظ بلیٹ” مسلط کرنے کے لئے کوشاں

واشنگٹن کی طرف سے "ضبط نفس” سے کام لینے کی درخواست ۔۔۔ فرانس کے مطالبے پر آج سلامتی کونسل کا اجلاس ۔۔۔ کرد رہنما کا انقرہ کے ساتھ "کشیدگی” کے بارے میں ماسکو پر الزام

ایک ترک لڑکا ترک افواج کے ٹینکوں کی قطار کے پاس کھڑا ہے جو کل شمالی شام میں عفرین کی جانب جا رہے تھے (ا۔ف۔ب)

انقرہ: سعید عبد الرازق – بیروت: نذیر رضا – پیرس: میشال ابو نجم

       کل ترک افواج اور ترک حمایت یافتہ "ڈیموکریٹک شامی افواج” کے گروپوں کا "زیتون کی شاخ” نامی کاروائی کے ضمن میں شامی شہر عفرین کے علاقے میں داخل ہو کر 5 کلومیٹر تک پش قدمی کر چکی ہیں، اس سے ترکی کی جانب سےشامی اراضی کے اندر 30 کلومیٹر تک کے علاقے میں پھیلے ہوئی "محفوظ بلیٹ” ملسط کرنے کی کوشش ابھر کر سامنے آگئی ہے اور اس میں عفرین کا علاقہ بھی شامل ہے۔ (۔۔۔)

      اگرچہ کل ترک صدر رجب طیب اردگان نے عفرین کاروائی کو جلد از جلد ختم کرنے کے عزم کا اظہار کیا مگر ریاست ہائے متحدہ امریکہ نے ترکی سے "ضبط نفس” سے کام لینے اور آپریشن کو محدود کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ (۔۔۔)

      اسی ضمن میں، فرانسیسی وزیر خارجہ نے کل شام "ٹویٹر” پر بیان دیا ہے کہ آج سلامتی کونسل پیرس کی درخواست پر شام کی صورت حال کے بارے میں ہنگامی اجلاس منعقد کرے گی۔

      دریں اثناء، شامی کردوں نے انقرہ اور ان کی حمایت یافتہ شامی افواج کی طرف سے عفرین کے علاقے میں فوجی کاروائی کی ذمہ داری روس پر عائد کی ہے۔ (۔۔۔)

 

پیر – 6 جمادى الأولى 1439 ہجری – 22 جنوری 2018ء شمارہ: [14300]
الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>