سعودی عرب کا 2018 کے بعد بھی تیل پیدا کرنے والے ممالک سے تعاون کا مطالبہ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: پیر, 22 جنوری, 2018
0

سعودی عرب کا 2018 کے بعد بھی تیل پیدا کرنے والے ممالک سے تعاون کا مطالبہ

مکمل توازن کا حصول جلد ممکن نہیں: الفالح

سعودی عرب کے توانائی کے وزیر کل مسقط میں اوپیک کے سیکرٹری جنرل اور روسی وزیر توانائی کے مابین کل مسقط میں مشترکہ وزارتی کمیٹی کے اجلاس کے دوران (ا۔ف۔ب)

 

مسقط: وائل مہدی

       کل سعودی عرب نے تیل پیدار کرنے والے ممالک کی تنظیم (اوپیک) اور اس تنظیم سے باہر دیگر تیل پیدا کرنے والے ممالک سے 2018 کے بعد ایک نیا "فریم ورک” قائم کرنے کا مطالبہ کیا ہے، کیونکہ ان کے مابین تیل کی پیداوار میں کمی کا معاہدہ امسال ختم ہو جائے گا۔

       سعودی عرب کے وزیر توانائی خالد الفالح نے مسقط میں معاہدے کی نگرانی کرنے والی مشترکہ وزراء کمیٹی کے اجلاس سے قبل بیان دیتے ہوئے کہا کہ "ہمیں اپنی کوششوں کو صرف 2018 تک محدود نہیں کرنا چاہئے بلکہ ہمیں مزید تعاون کے لئے ایک فریم ورک پر تبادلہ خیال کرنا ہوگا”۔ انہوں نے مزید کہا کہ "میں نے فریم ورک میں توسیع کے بارے میں بات کی ہے جو ہم نے شروع کیا تھا (۔۔۔) کہ اسے 2018 کے بعد تک وسعت دی جائے”۔ (۔۔۔)

پیر – 6 جمادى الأولى 1439 ہجری – 22 جنوری 2018ء شمارہ: [14300]
الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>