روسی ایرانی اختلافات غوطہ مذاکرات میں رکاوٹ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: پیر, 12 مارچ, 2018
0

روسی ایرانی اختلافات غوطہ مذاکرات میں رکاوٹ

ماسکو، شام میں واشنگٹن کے اقدامات کا مقابلہ کرنے کے لئے انقرہ کے ساتھ ہم آہنگی پیدا کر رہا ہے

کل دمشق میں مشرقی غوطہ کے علاقے کفر بطنا پر شام کے حکومتی لڑاکا طیاروں کی بمباری (ا۔ف۔ب)

بیروت: نذیر رضا –  ماسکو: رائد جبر

      شام کے دارالحکومت دمشق کے مشرقی غوطہ کے بارے میں مذاکرات کو ایک طرف سے روس اور دوسری جانب شامی حکومت اور ایران کے مابین اختلافات کے نتیجے میں ہونے والی پیچیدگیوں نے گھیر رکھا ہے، جیسا کہ شامی حزب اختلاف کے مذاکراتی باخبر ذریعہ کے مطابق یہ سب گروپوں اور ڈویژنوں کے مابین ہونے والے اختلافات کے باعث ہے۔

      ذریعہ نے "الشرق الاوسط” سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ روس کا اصرار ہے کہ "نصرت فرنٹ” کے جنگجوؤں کو غوطہ سے نکال کر جنگ بندی قائم کی جائے، جبکہ ایرانی ملیشیاؤں کی حمایت یافتہ شامی حکومت علاقے پر کنٹرول حاصل کرنے کے لئے فوجی حل کرنا چاہتی ہے۔ (۔۔۔)

      دوسری جانب، ماسکو شام میں وسیع پیمانے پر فوجی کاروائی کرنے کا ارادہ رکھتا ہے تاکہ واشنگٹن کے حمایت یافتہ انقرہ کا مقابلہ کیا جا سکے، جسے وہ اپنے خلاف "بڑھتا ہوا خطرہ” شمار کرتا ہے۔ کل ذرائع ابلاغ نے اعداد وشمار کے حساب سے رپورٹس شائع کی ہیں، جس میں ماسکو کی شام میں فوجی سرگرمیوں کو مضبوط بنانے کے حکمت عملی کو واضح کیا گیا ہے تاکہ روس کے متوقع نقصانات کا اندازہ لگایا جا سکے۔ (۔۔۔)

 

پیر – 24 جمادى الآخر 1439 ہجری – 12 مارچ 2018ء  شمارہ: [14349]
الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>