"جوہری" شبہات نے ایرانی ریال کو ہلا کر رکھ دیا - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: پیر, 9 اپریل, 2018
0

"جوہری” شبہات نے ایرانی ریال کو ہلا کر رکھ دیا

گذشتہ ماہ ایک ایرانی تہران کے وسطی علاقے فردوسی کی شاہراہ استنبول میں واقع ایک منی ایکسچینجر کی دکان کے سامنے سے گزرتے ہوئے (تسنیم)

 

تہران: "الشرق الاوسط”

       کل ایران میں ڈالر کے مقابلے میں ایرانی ریال کی قیمت میں ریکارڈ کمی دیکھنے میں آئی، جو کہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی جانب سے جوہری معاہدے پر حمتی موقف کے متوقع اعلان سے تین ہفتے قبل دوبارہ اقتصادی پابندیاں عائد کئے جانے کے خوف کے باعث ہے۔

      تہران کی مارکیٹوں میں ڈالر کی قیمت میں 5800 تومان تک کا اضافہ دیکھنے میں آیا، جبکہ تہران میں منی ایکسچینجر کی دکانوں پر 700 تومان کے اضافہ دیکھنے میں آیا۔ دریں اثنا غیر سرکاری مارکیٹوں میں 24 گھنٹوں کے دوران 14 فیصد کے اضافے کے ساتھ یہ 6000 تومان کا حد کراس کر گیا ہے اور یہ صدر حسن روحانی کے عہد میں پہلی بار اس قدر اضافہ ہوا ہے۔

      قیمتوں میں اضافہ ایرانیوں پر منفی طور پر اثر انداز ہوا ہے کہ لوگ مزید پابندیوں کے دوبارہ لگنے اور معاشی مستقبل سے خوفزدہ ہو کر منی ایکسچینجرز کے سامنے لمبی قطاروں میں کھڑے ڈالر حاصل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ (۔۔۔)

 

پیر – 23 رجب 1439 ہجری – 09 اپریل 2018ء  شمارہ: [ 14377]
الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>