سعودی عرب شام کے مصائب کو ختم کرنے کے لئے ایک بار پھر دعوت دے رہا ہے اور سہ فریقی حملے کا ذمہ دار شامی حکومت کو قرار دے رہا ہے - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: بدھ, 18 اپریل, 2018
0

سعودی عرب شام کے مصائب کو ختم کرنے کے لئے ایک بار پھر دعوت دے رہا ہے اور سہ فریقی حملے کا ذمہ دار شامی حکومت کو قرار دے رہا ہے

خادم حرمين شريفين کل ریاض میں وزارتی کابینہ کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے (واس)

 

ریاض: "الشرق الاوسط”

      سعودی عرب کی وزراء کونسل نے "شام کی عوام کے مصائب کو کم کرنے اور شامی سرزمین کی وحدت اور آزادی کی حفاظت” کے بارے میں اپنے ملکی مطالبے کو بار دگر باور کرایا ہے کہ شام میں ریاست ہائے متحدہ امریکہ، برطانیہ اور فرانس کی جانب سے کی گئی عسکری کاروائیوں کی ذمہ دار شامی حکومت ہے۔ جبکہ یہ حملہ "شامی حکومت کی جانب سے معصوم شہریوں؛ جن میں بچے اور خواتین شامل ہیں ان کے خلاف بین الاقوامی سطح پر ممنوعہ کیمیائی ہتھیاروں کے مسلسل استعمال کئے جانے کے جواب میں تھا جو شامی حکومت برادر شامی عوام کے خلاف کئی سالوں سے مجرمانہ کاروائیاں جاری رکھے ہوئے ہے”۔

      یہ بیان خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبد العزیز کی زیر صدارت شہر ریاض کے یمامہ پیلس میں کل بعد از ظہر منعقدہ وزارتی کونسل کے اجلاس کے ضمن میں دیا گیا۔ (۔۔۔)

 

بدھ – 2 شعبان 1439 ہجری – 18 اپریل 2018ء –  شمارہ نمبر: 14386
الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>