ایران میں کشیدگی اور حوزات مظاہرین کا نیا نشانہ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: اتوار, 5 اگست, 2018
0

ایران میں کشیدگی اور حوزات مظاہرین کا نیا نشانہ

ایک ایسا منظر جس میں جمعہ کے دن حکومت کے حامیوں کو روحانی پر بد نظمی کے الزام کی طرف اشارہ کرنے والے پوسٹر اٹھائے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے

لندن: عادل السالمی واشنگٹن معاذ العمری

          منگل کے دن ایران پر امریکہ کی طرف سے دوبارہ لگائی جانے والی پابندیوں کے ساتھ ہی ایران کی سڑکوں پر لوگوں کا ہجوم ظاہر ہوا ہے اور مختلف شہروں میں مظارے ہوئے ہیں لیکن اس مرتبہ یہ اشارہ ملا ہے کہ دار الحکومت تہران کے قریب علمی حوزہ کو نشانہ بنایا گیا ہے اور یہ ایک ایسی تبدیلی ہے جو ایرانی انتظامیہ کے لئے دھمکی کے سامان کے مترادف ہے۔

       فرانسیسی صحافتی ایجنسی کے مطابق اجتیاد شہر کے حوزہ کے مہتمم حجة الاسلام ہندیانی نے کہا کہ پاچ سو مظاہرین نے کل شام نو بجے حوزہ پر حملہ کیا اور وہاں کی چیزوں کو جلانے اور اس کے دروازوں کو توڑنے کی کوشش کی اور انہوں نے مزید کہا کہ مظاہرہ کرنے والے پتھر اٹھائے ہوئے تھے اور انہوں نے نماز ہال کی تمام کھڑکیوں کو توڑ ڈالا اور وہ انتظامیہ کے خلاف نعرے بھی لگا رہے تھے اور سوشل نیٹ ورک پر ایسی ویڈیوں کو نشر کیا گیا ہے جس میں سینکڑوں لوگوں کو ان مختلف شہروں میں ہونے والے مظاہروں میں شرکت کرتے ہوئے دیکھا گیا ہے جن میں تہران اصفہان کرج کے شہر شامل ہیں۔

          امریکی انتظامیہ نے کل یورپی ممالک کو ایران پر لگائی گئی پابندیوں کو نظر انداز کرنے سے آگاہ کیا ہے اور پرزور انداز میں کہا ہے کہ ایرانی انتظامیہ کے ساتھ تجارتی اور معاشی تعلقات کو محدود کرنے کی ضرورت ہے۔

ہفتہ – 22 ذی قعدہ 1439 ہجری – 04 اگست 2018ء شمارہ نمبر (14494)

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

متعلقہ عنوانات‬:
شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>