میزائلوں کی دار الحکومت کے بعد غزہ میں دوبارہ پرسکون ماحول - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعہ, 10 اگست, 2018
0

میزائلوں کی دار الحکومت کے بعد غزہ میں دوبارہ پرسکون ماحول

کل اسرائیلی حملہ کے بعد غزہ کی عمارتوں سے اٹھتے ہوئے دھواں کو دیکھا جا سکتا ہے

رام اللہ: کفاح زبون

            باخبر فلسطینی ذرائع نے "الشرق الاوسط” کو بتایا ہے کہ عرب اور بین الاقوامی اداروں کی طرف سے ہونے والی مداخلت کے بعد گذشتہ نصف رات سے قبل حماس اور اسرائیل کے درمیان ایک نیا معاہدہ نفاذ کے دائرہ میں داخل ہو چکا ہے اور یہ معاہدہ ایک ایسے قاعدہ کی بنیاد پر ہوا ہے جس میں پرسکون کے مقابلہ میں پرسکون کا ذکر ہے۔

          عبرانی زبان میں نشر ہونے والی ہآرٹس نامی میگزین میں ایک اسرائیلی ذمہ دار نے کشیدگی کے ختم ہونے کی تاکید کی ہے اور واضح کیا ہے کہ اگر غزہ کی طرف سے بغیر میزائل داغے ایک رات بھی گزر گئی تو اس کا مطلب یہ ہوا کہ کشیدگی ختم ہو گئی اور یہ معاہدہ ایک بڑی شدت والی گشت کے بعد اقوام متحدہ کے سفیر نیکولائے میلاڈینو کے ذریعہ مصری مداخلت کے بعد ہوا ہے۔

           اسرائل اور حماس نے سنہ 2014ء میں ہونے والی جنگ کے ختم ہونے کے بعد وسیع پیمانہ پر ایک دوسرے پر حملہ کیا ہے اور اسرائیل نے تحریک اور دیگر جماعتوں کے ماتحت 150 جگہوں کو نشانہ بنایا ہے جبکہ اس پر 180 میزائل اور گولا بارود داغے گئے ہیں اور سنہ 2014ء میں ہونے والی جنگ کے بعد سے اب تک پہلی مرتبہ گراڈ میزائل بئر السبع شہر کے قریب پہنچا ہے جو غزہ سے چالیس کیلو میٹر کی دوری پر واقع ہے اور اسرائیل نے پٹی کی ایک عمارت پر حملہ کیا ہے۔

           اسرائیل کی طرف سے ہونے والے وسیع حملہ میں تین شہید ہوئے ہیں جن میں ایک عورت، اس کا بچہ اور حماس کا ایک فوجی ہے اور فلسطینی حملہ میں سات اسرائیلی ہلاک ہوئے ہیں۔

          فلسطینی جماعت نے کشیدگی کے انتہاء کا اعلان اس صورت میں کیا تھا کہ اگر اسرائیل اس کی پابندی کرے گا تو کشیدگی ختم ہو جائے گی اور منی سلامتی کونسل نے زمین پر ہونے والے نئے واقعات کے مطابق پٹی میں مسلسل کاروائی جاری رکھنے کی ذمہ داری فوج کو دی ہے۔

           نئے معاہدہ کا آغاز ہو چکا ہے لیکن میلاڈینو نے اپنے بیان میں کسی طرح کی کشمکش ہونے سے آگاہ کیا ہے کیونکہ اس کی وجہ سے غزہ پٹی کے سلسلہ میں کی جانے والی تمام کوششوں کو برباد کر دے گی۔

جمعہ – 28 ذی قعدہ 1439 ہجری – 10 اگست 2018ء شمارہ نمبر (14500)

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>